بدھ , 23 اگست 2017

افغان عوام، سعودی عوام کی طرح حکومتی امور سے دور ہیں:مولوی باریکزئی

کابل(مانیٹرنگ ڈیسک ) دینی کتابوں میں حکومتی امور میں عوامی شرکت کی تاکید کی گئی ہےصوبہ فراہ سے مولوی محمد حسن باریکزئی یکتن نے دری نیوز سے گفتگو میں کہا کہ: دینی کتابوں میں حکومتی امور میں عوامی شرکت کی تاکید کی گئی ہے اور ملک کو ان حالات سے نکالنے کے لیے عوام کا میدان میں آنا ضروری ہے۔
انہوں نے اس گفتگو میں کہا: قرآن نے فرمایا ہے کہ «إِنَّ اللَّهَ لا یُغَیِّرُ مَا بِقَوْمٍ حَتَّى یُغَیِّرُوا مَا بِأَنفُسِهِمْ»/رعد 11

اس کا مطلب یہ ہے کہ ہر معاشرے کی اچھائی اور برائی ان کے اپنے ہاتھ میں ہے۔
انہوں نے اس آیت سے استدلال کرتے ہوئے کہا آج افغانستان کا مسئلہ بھی یہی ہے کہ عوام حکومت سے دور ہیں، اور الیکشن میں ان کی شرکت کم ہے۔

انہوں نے تمام اسلامی ممالک میں عوام کا اپنے ملک کے مستقبل کے فیصلوں میں شریک نہ ہونے پر افسوس کا اظہار کیا، خاص طور پر سعودیہ اور خلیجی ممالک کی طرف اشارہ کیا کہ ان ممالک میں بس چند ہی افراد قوم کا فیصلہ کرتے ہیں۔

"باریکزئی” نے ایران کے الیکشن کے بارے میں بھی بات کی، اور اس ملک میں الیکشن کو ایک رول ماڈل کہا جس میں عوام اپنی رائے سے فیصلہ کرتے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ افغانستان اگر چاہتا ہے کہ ان حالات سے نکل سکے تو عوام کو اپنا سیاسی لیڈر چننے کے لیے میدان میں آنا پڑے گا، ناکہ دوسرے ممالک کے سفارتخانوں میں بیٹھ کر سیاستدان اس قوم کا فیصلہ کریں۔

یہ بھی دیکھیں

بلوچستان: ہرنائی میں بارودی سرنگ کادھماکہ، چھ سیکورٹی اہلکار ہلاک

کابل (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع ہرنائی میں بارودی سرنگ کے دھماکے ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے