ہفتہ , 6 مارچ 2021

کیچ میں ایک اور انتخابی اُمیدوار کا مکان نذرِ آتش

[caption id="attachment_1138" align="alignleft" width="300"]پولیس کا کہنا ہے کہ حملہ آوروں نے مکان کے اندر موجود افراد کو باہر نکالا اور اس کے بعد گھر کو آگ لگا دی پولیس کا کہنا ہے کہ حملہ آوروں نے مکان کے اندر موجود افراد کو باہر نکالا اور اس کے بعد گھر کو آگ لگا دی[/caption]

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے پسماندہ ضلعے کیچ میں صوبائی اسمبلی کی نشست پر ضمنی انتخاب لڑنے والے امیدوار میر محمد علی رند کا مکان نذرِ آتش کر دیا گیا۔

یہ اس علاقے میں گذشتہ ایک ہفتے کے دوران کسی بھی سیاسی امیدوار کے مکان کو نذر آتش کرنے کا یہ دوسرا واقعہ ہے۔

 

مقامی انتظامیہ نے بتایا کہ بدھ کو مند میں واقع میر محمد علی رند کے مکان کو آگ لگائی گئی۔

مند میں انتظامیہ کے ایک اہلکار نے بتایا کہ گذشتہ شب اس علاقے میں نامعلوم مسلح افراد آئے اور انھوں نے اُمیدوار میر محمد رند کے مکان کو آگ لگا دی۔

اہلکار کا کہنا ہے کہ اس واقعے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا تاہم مکان اور اس میں موجود سامان کو نقصان پہنچا۔

میر محمد علی رند کا تعلق بلوچستان نیشنل پارٹی(عوامی ) سے ہے۔

اس سے قبل اس حلقے سے انتخاب میں حصے لینے والے حکمران جماعت مسلم لیگ (ن) کے امیدوار اکبر آسکانی کے مکان کو بھی نذر آتش کیا گیا تھا۔

میر محمد علی رند کے مکان کو نذر آتش کرنے کی ذمہ داری تاحال کسی نے قبول نہیں کی ہے لیکن اکبر آسکانی کے مکان پر حملے کی ذمہ داری کالعدم عسکریت پسند تنظیم بلوچ ریپبلکن آرمی نے قبول کی تھی۔

بلوچستان اسمبلی کی نشست پی بی 50 کیچ میں ضمنی انتخاب 31 دسمبر کو ہو رہا ہے۔

واضح رہے کہ بلوچ عسکریت پسند تنظیموں نے یہ دھمکی دی ہے کہ لوگ حلقے میں انتخابی عمل سے دور رہیں۔

چند روز قبل اس علاقے میں انتخابی مہم چلانے والے پانچ افراد کو اغوا بھی کیا گیا تھا جن کی تاحال رہائی عمل میں نہیں آئی۔

ان مغویوں کا تعلق نیشنل پارٹی اور بی این پی عوامی سے ہے۔

یہ بھی دیکھیں

فلسطین کی آزادی اور اسرائیل کا خاتمہ، پاکستانی قوم کی خواہش

حماس کے رہنما اسمٰعیل ہنیہ نے کہا ہے کہ پاکستان نے ہمیشہ فلسطین کی حمایت …