اتوار , 7 مارچ 2021

2016 : نئے سال کی تقریبات شروع ہوگئیں

[caption id="attachment_1141" align="alignleft" width="300"]’ہاربر اینڈ اوپرا ہاؤس‘ کے ارد گرد کا علاقہ اس وقت روشنیوں میں نہا گیا جب آتش بازی شروع ہوئی ’ہاربر اینڈ اوپرا ہاؤس‘ کے ارد گرد کا علاقہ اس وقت روشنیوں میں نہا گیا جب آتش بازی شروع ہوئی[/caption]

دنیا بھر میں نئے سال کی تقریبات کا آغاز کی تیاریاں مکمل ہو گئی ہیں اور حسب روایت نئے سال کی پہلی بڑی عوامی تقریبات نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا میں منعقد ہوئیں۔

نیوزی لینڈ میں سب سے بڑی تقریب آکلینڈ کے سکائی ٹاور پر ہوئی جہاں ہزاروں لوگوں نے ہم آواز ہو کر 2015 کی آخری گھڑیوں کو کاؤنٹ ڈاؤن کیا اور پھر نئے سال کا استقبال خوبصورت ’لیزر شو‘ اور آتش بازی سے کیا۔

ایک اندازے کے مطابق اس تقریب میں کم و بیش 25 ہزار لوگ شریک ہوئے۔

نیوزی لینڈ کے پڑوسی ملک آسٹریلیا میں نصف شب پر سڈنی کے ساحل کے قریب ’ہاربر اینڈ اوپرا ہاؤس‘ کے ارد گرد کا علاقہ اس وقت روشنیوں میں نہا گیا جب آتش بازی شروع ہوئی۔ حکام کا اندازہ تھا کہ اس مرتبہ تقریباً دس لاکھ افراد اس آتش بازی کو دیکھنے آئیں گے۔

نیوزی لینڈ میں نئے سال کو خوش آمدید کہنے سے پہلے یکم جنوری 2016 کا آغاز ایک گھنٹہ قبل سمووا اور کیریباتی کے چھوٹے ممالک میں ہوا۔

[caption id="attachment_1142" align="alignleft" width="300"]نیوزی لینڈ میں سب سے بڑی تقریب آکلینڈ کے سکائی ٹاور پر ہوئی نیوزی لینڈ میں سب سے بڑی تقریب آکلینڈ کے سکائی ٹاور پر ہوئی[/caption]

جوں جوں نئے سال کی پہلی گھڑی ایشیا کے دیگر ممالک تک پہنچے گی ہانگ کانگ، سنگاپور اور بیجنگ میں بھی آتش بازی کے مظاہرے دکھائی دیں گے۔

ادھر مصر میں نئے سال کی تقریبات قاہرہ کے قریب واقع تاریخی اہرام پر منعقد ہوں گی۔ مصری حکومت ان تقریبات سے مصر میں سیاحت کو بحال کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

خلیجی ریاستوں میں اس سال بھی سب سے بڑی عوامی تقریب دبئی کے برج خلیفہ پر منعقد ہو گی۔

as233 as234 as235

 

یہ بھی دیکھیں

ایک ہی تھیلے کے چٹے بٹے…

امریکا کے نئے صدر جو بائیڈن نے ڈونلڈ ٹرمپ کے کئی متنازع فیصلوں کو تبدیل …