ہفتہ , 6 مارچ 2021

روسی فوجیوں کی واپسی کے باوجود اتحادیوں کے مابین تعاون برقرار رہیگا،ڈاکٹر علی اکبر ولایتی

4bk39ef30a7cad4fnd_800C450

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک)شام میں روسی فوجیوں کی کمی کے ماسکو کے فیصلے سے شام میں اتحادیوں کے تعاون میں کوئی تبدیلی واقع نہیں ہوگی۔ان خیالات کا اظہار بین الاقوامی امور میں رہبر انقلاب اسلامی کے مشیر ڈاکٹر علی اکبر ولایتی نے کہا۔ تفصیلات کے مطابق بین الاقوامی امور میں رہبرانقلاب اسلامی کے مشیر ڈاکٹرعلی اکبر ولایتی نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ شام میں روسی فوجیوں کی تعداد میں کمی سے ایران، روس، شام اور حزب اللہ جیسے اتحادیوں کے مابین تعاون میں کوئی تبدیلی نہیں ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ روسی حکام نے کہا ہے کہ شام میں ان کے اڈے باقی رہیں گے لیکن ممکن ہے کہ ان کے فوجیوں کی تعداد کم ہوجائے تاہم ان تمام باتوں کے باوجود ہم یہی سمجھتے ہیں کہ جب بھی ضروری ہوا روس دہشت گردوں کے خلاف جنگ میں پوری قوت کے ساتھ شرکت کرے گا اور جہاں ضرورت ہوگی وہ اپنی کارروائیاں تیزکردے گا ۔ ڈاکٹر ولایتی نے کہا کہ شام میں دہشت گردوں کے خلاف شامی حکومت کے اتحادیوں کو شاندار کامیابیاں حاصل ہوئی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اب جبکہ شام میں جنگ بندی نافذ ہے اور جنیوا میں مذاکرات بھی شروع ہوا چاہتے ہیں تو ہم پورے اطمینان کے ساتھ یہ کہتے ہیں کہ شام اور اس کے اتحادیوں منجملہ روس اور ایران کو برتری حاصل ہے اور ہم مستقبل کے بارے میں پر امید ہیں ۔ڈاکٹر علی اکبر ولایتی نے کہاکہ جو ممالک حزب اللہ کو دہشت گرد قرار دے رہی ہیں تو یہ اقدام ان کی مایوسی اور ناکامی کو ظاہر کرتاہے ۔ انہوں نے کہا کہ آج کون ہے جو نہیں جانتا کہ حزب اللہ امت اسلامیہ اور عرب دنیا کے لئے عزت و افتخار کا باعث ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ٹرمپ دہشت گرد گروہ کے سرغنہ ہیں: سی این این

امریکی نیوز چینل سی این این نے رپورٹ دی ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ ایک دہشت …