منگل , 22 اکتوبر 2019

سعودی عرب کو ٹرمپ سے کچھ نہیں ملے گا, سعودیہ کا ٹرمپ پر اعتماد محض حماقت ہے

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک) اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے بین الاقوامی امور کے مشیر حسین امیر عبداللہیان نے سعودی عرب کے حکام کی طرف سے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ پر اعتماد کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب کو امریکی صدر ٹرمپ سے کچھ نہیں ملے گا جبکہ ٹرمپ سعودی عرب سے بڑے پیمانے پر ٹیکس اور تاوان وصول کرنے میں کامیاب ہو گیا ہے۔

اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے بین الاقوامی امور کے مشیر حسین امیر عبداللہیان نے تہران میں فلسطینی تنظیم حماس کے نمائندے خالد القدومی سے ملاقات میں سعودی عرب کے حکام کی طرف سے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ پر اعتماد کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب کوامریکی صدر ٹرمپ سے کچھ نہیں ملے گا جبکہ ٹرمپ سعودی عرب سے بڑے پیمانے پر ٹیکس اور تاوان وصول کرنے میں کامیاب ہو گیا ہے۔

حسین امیر عبداللہیان نے کہا کہ ٹرمپ کے دورہ سعودی عرب کے بعد یمن کے نہتے اور بےگناہ عوام پر سعودی عرب کے وحشیانہ اور مجرمانہ حملوں میں اضافہ ہو گیا ہے جبکہ بحرینی حکومت کے بحرینی عوام پر بھی مظالم بڑھ گئے ہیں۔ امیر عبداللہیان نے کہا کہ امیرکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی سعودی عرب کے دورے کے دوران یہ کوشش تھی کہ مسئلہ فلسطین کو سعودی عرب اور اس کے اتحادی ممالک فراموش کردیں اور وہ اپنی توجہ اسرائیل سے ہٹا کر اسلامی جمہویرہ ایران کی طرف مبذول کریں۔

امیر عبداللہیان نے کہا کہ ٹرمپ سعودی عرب کے ذریعہ مسئلہ فلسطین کو پس پشت ڈالنے میں کسی حد تک کامیاب ہو گیا ہے لیکن فلسطینی عوام کسی کو ایسا کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔ خالد قدومی نے اس ملاقات میں ایران میں فلسطین کی حمایت میں چھٹی عالمی کانفرنس کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران واحد اسلامی ملک ہے جو فلسطینیوں کا سچا حامی ہے اور فلسطینی عوام کو ایران کی حمایت پر فخر ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ترک اور کرد کا ایک دوسرے پر جنگ بندی کی خلاف ورزی کا الزام

انقرہ: شمالی شام میں 5 روزہ جنگ بندی کے اعلان کے باوجود فریقین کی جانب …