منگل , 22 اکتوبر 2019

قطر, سعودی اور اماراتی کشیدگی جاری، قطر کے پاس آپشن؟؟؟

عرب تجزیہ نگار کہتے ہیں کہ قطر کے پاس چند آپشنز ہیں:

الف: قطر چار ملکی (سعودیہ، امارات، بحرین اور مصر) مطالبات کو مکمل طور پرمن و عن مان لے اور ان مطالبات میں نمایاں طور پر ایران کے ساتھ مکمل ہر قسم کے روابط کا خاتمہ، اخوان المسلمون کے ساتھ ہر قسم کے تعاون کا خاتمہ، حماس سے تعلق رکھنے والے ہر قسم کے افراد خاص کر خالد مشعل، ابو مرزوق وغیرہ کو اس طرح قطر سے نکال دینا جس طرح اسرائیلی دباؤ کے سبب ترکی نے انہیں اپنے ملک سے نکال دیا تھا۔

ب: قطر کے پاس دوسرا آپشن یہ ہے کہ وہ مزاحمتی بلاک کا حصہ بنے اور اس سلسلے میں ترکی بھی اہم کرداد ادا کر سکتا ہے کیونکہ ٹرمپ کی جانب سے اردگان کی انسلیٹ، کردوں اور گولن کی امریکی حمایت کے بعد وہ بھی کافی تپا بیٹھا ہے۔

ج: قطری بادشاہ ڈائریکٹ ٹرمپ کے پاس دوسو ملین ڈالر کا بھتہ یا پروٹیکشن فنڈ لے کر چلا جائے جیسا کہ سعودی شہزادہ بن سلمان نے کیا ۔

ہمیں نہیں معلوم قطر کونسے آپشن کو لینے جا رہا ہے لیکن ہمارے خیال میں اس کے علاوہ کوئی آپشن نہیں ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ترک اور کرد کا ایک دوسرے پر جنگ بندی کی خلاف ورزی کا الزام

انقرہ: شمالی شام میں 5 روزہ جنگ بندی کے اعلان کے باوجود فریقین کی جانب …