جمعہ , 23 اگست 2019

برطانیہ: دہشت گردی کی منصوبہ بندی، مسلم جوڑے کو عمر قید کی سزا

لندن: لندن خود کش دھماکوں کی دسویں برسی کے موقع پر مبنیہ طور پر دھماکے کی منصوبہ بندی کرنے والے مسلم جوڑے کو عمر قید کی سزا سنادی گئی ہے۔

568477ddccdc6

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق 25 سالہ محمد رحمان، جو کہ ٹوئٹر پر موجود آکاؤنٹ ’خاموش بمبار‘ کے ذریعے لوگوں سے کسی شوپنگ سینٹر یا لندن کی زیر زمین ٹرین کے نیٹ ورک پر دھماکے کا پوچھ رہا تھا، کو 27 سال کی سزا سنائی گئی ہے۔

جج جیرمی باکر نے اپنے حکم کہا ہے کہ ملزم کی اہلیہ 24 سالہ ثناء احمد خان کو الزام ثابت ہونے پر 25 سال کی سزا کاٹنا ہوگی۔

محمد رحمان کو ٹوئٹر پر ایک پوسٹ ’ویسٹ فیلڈ شوپنگ سینٹر یا لندن زیر زمین؟ کسی بھی تجویز کو سراہا جائے گا‘ لگانے پر رواں سال مئی میں گرفتار کیا گیا تھا۔

مزکورہ ٹوئٹ کو القاعدہ کی جانب سے 2005 دھماکوں کے حوالے سے ایک بیان تصور کیا جارہا تھا، جس میں 5 خود کش بمباروں نے لندن کے ٹرانسپورٹ سسٹم کو نشانہ بنایا تھا اور 52 افراد کو ہلاک کردیا تھا۔

مسلم جوڑے پر الزام ہے کہ انھوں نے حملے کے لیے 28 مئی کا دن منتخب کررکھا تھا۔

پولیس نے ملزمان کے گھر سے 10 کلو یوریا نائٹریٹ برآمد کیا تھا جو کہ ایک بڑے بم کو بنانے کے لیے مبنیہ طور پر استعمال کیا جاسکتا تھا۔

اس کے علاوہ محمد رحمان نے اپنے گھر کے پچلھے حصے میں دھماکہ خیز مواد کی جانچ کرتے ہوئے ایک ویڈیو بھی بنائی تھی۔

کراؤن پروسیکیوشن سروس کے مطابق محمد رحمان پر حملے کیلئے بم بنانے، اور اس کی اہلیہ پر حملے کی منصوبہ سازی اور کیمیکل خریدنے کا الزام ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ اگر ان کا تیار کردہ بم لندن کے زیر زمین ٹرین سسٹم میں پھٹ جاتا تو اس سے ’متعدد اموات‘ ہوسکتی تھیں۔

کاؤنٹر ٹیررزم ڈویژن کے سی پی ایس سوسان ہیمنگ کا کہنا تھا کہ ’دہشت گرد حملے کا ارادہ ظاہر ہوچکا ہے‘۔

’جوڑا حملے کے بہت قریب تھا۔ ان کو ڈیٹونیٹر بنانے کے لیے صرف کیمیکل خریدنے کی ضرورت تھی‘۔

یہ بھی دیکھیں

کوپن ہیگن کے شدید ردعمل کے بعد ٹرمپ نے اپنا دورہ ڈنمارک ملتوی کردیا

کوپن ہیگن (مانیٹرنگ ڈیسک)جزیرہ گرین لینڈ کی خریداری سے متعلق امریکی صدر کی تجویز پر …