پیر , 28 ستمبر 2020

استنبول، فتح اللہ گولن کی جانب سے پیرس حملوں کی شدید مذمت

fethullah-gulen-60

انقرہ (مانیٹرنگ ڈیسک) برسلز میں ہونے والے خوفناک دھماکوں کے نتیجے میں افراد کی ہلاکت اور زخمی ہونے کی خبر نے مجھے شدید صدمہ پہنچایا ہے۔ اس بات سے قطع نظر کہ یہ حملہ کیوں کیا گیا یا اس کا ذمہ دار کون ہے، میں ایک مرتبہ پھر ہر قسم کی دہشتگردی کی مذمت کرتا ہوں۔ان خیالات کا اظہار ترکی کے رہنما فتح اللہ گولن نے کیا۔ انہوں نے کہا کی کسی بھی قسم کی دہشتگردی امن کے لیے ایک دھچکہ ہے۔ ایسے سفاکانہ اقدامات کی کوئی توضیح پیش نہیں کی جا سکتی اور ہر کسی کو ان کی مذمت کرنی چاہیے۔ ایسے واقعات کے بعد نہ تو پیچھے چھپنے کی کوئی گنجائش ہے اور نہ ہی کوئی اگر مگر قابل قبول ہے۔ انہوں نے کہا کہ زندگی مقدس ترین عالمی اقدار میں سب سے بڑھ کر ہے۔ دہشتگردی اس مشترکہ قدر کے لیے سب سے بڑا خطرہ ہے اور روئے زمین پر کیے جانے والے بد ترین افعال میں سے ہے، کوئی بھی حقیقی مذہب اس حد تک نہیں گر سکتا کہ ایسے افعال کی تایئد کرے۔ انہوں نے کہا کہ اسلام ہر قسم کی دہشتگردی کو مکمل طور پر رد کرتا اور اس کی کھل کر مذمت کرتا ہے۔ قران پاک کے مطابق کسی ایک شخص کو قتل کرنے والا یوں ہے جیسے اس نے پوری انسانیت کو قتل کیا ہو۔ مسلمان انسانی زندگی کو ایک اہم قدر کی حیثیت سے دیکھتے ہیں جس کی ہر قیمت پر حفاظت کی جانی چاہیے۔انہوں نے کہا مسلمان صرف امن کا داعی ہوتا ہے اور اسے ہمیشہ ایسا ہی رہنا چاہیےاس لیے ایک حقیقی مسلمان کے لیے دہشتگرد ہونا ممکن نہیں ۔ انہوں نے کہا تشدد اسلام کی حقیقی روح کے مکمل برعکس عمل ہے، میں برسلز میں ہونے والے حادثے میں زخمی ہونے والوں کی جلد شفایابی کی دعا کرتا ہوں اور اس سانحے میں ہلاک ہونے والوں کے خاندانوں، بئلجیئم کے عوام سے تعزیت کرتا ہوں۔

یہ بھی دیکھیں

ماسکو میں ملاقات کے بعد بھارت، چین کا سرحدی کشیدگی میں کمی لانے پر اتفاق

ماسکو: چین اور بھارت کا کہنا ہے کہ انہوں نے ماسکو میں ایک اعلیٰ سطح …