منگل , 19 ستمبر 2017

امیر کویت صباح الاحمد الجابر الصباح کی زندگی کا مختصر جائزہ

تاریخ پیدائش : 16جون 1929ء
جائے پیدائش: الجہراء کویت
والد: احمد الجابر الصباح (کویت کے دسویں امیر)
والدہ: میزہ عثمان السعید العیار
شریک ِ حیات: شیخہ فتوح السلمان الحمود الصباح (متوفیہ)
بچے: شیخ ناصر(شاہی دیوان کے وزیر)،شیخ حمد (کاروباری شخصیت)،شیخ احمد (متوفی)،شیخہ سلویٰ (متوفیہ)
ابتدائی زندگی اور تعلیم :
شیخ صباح1929ء کو الجہراء میں پیداہوئے اور اپنی ابتدائی تعلیم ’’المدرسہ بمبارکیہ‘‘میں حاصل کی، بعد ازاں ان کے والد نے انہیں مزید تعلیم کیلئے بیرون ملک بھیج دیا۔
1954ءمیں انہیں سپریم ایگزیکٹو کمیٹی کارکن مقرر کیا گیا۔
1955ءمیں انہیں ادارہ برائے سماجی اُمور، محنت اور پریس کے سربراہ کے طور پر متعین کیا گیا۔
1956ء میں انہیں سپریم کونسل ریگولیٹری اتھارٹی کا رکن متعین کیا گیا،یہ ادارہ اُس وقت حکمران کی رہنمائی کرتا تھا۔
17جنوری 1962ءکو کویت کی آزادی کے بعد کویت میں پہلی بار وزیروں کی کابینہ تشکیل پائی جس کی سربراہی اُس وقت امیر کویت عبداللہ السالم الصباح کررہے تھے ،اِس کابینہ میں شیخ صباح کو وزیر اطلاعات مقرر کیا گیا۔
28جنوری 1963ء کو شیخ صباح کو وزیر خارجہ مقرر کیا گیا،اور وہ اس منصب پر 20اپریل 1991ء تک فائز رہے۔
18اکتوبر 1992ءکو انہیں نائب مجلس وزراء کیساتھ ساتھ ایک بار پھر وزیر خارجہ مقرر کیا گیا ،وہ اس منصب پر جولائی 2003ء تک فائز رہے۔

14فروری 2001ء کو شیخ صباح نے اُس وقت کے وزراء کے سربراہ سعد العبد اللہ الصباح کی ناساز طبیعت کے باعث کویتی حکومت تشکیل دی اور 13جولائی 2003ء میں سعد العبد اللہ کی معذرت کے بعد صباح کو ان کی مجلس وزراء کا سربراہ مقرر کیا۔

شیخ صباح 24جنوری 2006ء تک اس منصب پر فائز رہے جسکے بعد کویتی پارلیمنٹ نے شیخ سعد العبد اللہ (جوحال ہی میں کویت کے امیر بنے تھے) کی علالت کے باعث ملک کی بھاگ دوڑ مجلس وزراء کے سپرد کردی اور مجلس وزراءنے شیخ صباح کوکویت کا امیر مقرر کردیا۔

بطور امیر کویت:
شیخ صباح 29جنوری 2006ء کو امیرکویت کے عہدے پر فائز ہوئے ۔1965ء کے بعد وہ پہلے کویتی امیر ہے جنہوں نے پارلیمنٹ میں حلف اٹھایا۔

شیخ صباح اس وقت خلیجی ریاستوں کے حکمرانوں میں سب سے زیادہ منجھے ہوئے حکمران ہیں ،خلیجی ریاستیں آپس میں ہونیوالے اختلافات اور کشیدگیوں میں ان کےثالثی کاکردار اداکرنے پر کبھی اعتراض نہیں کرتی جس کی حالیہ مثال قطر کے بائیکاٹ کے معاملے سے ملتی ہے،اس معاملے میں شیخ صباح ثالثی کا کردار ادا کررہے ہیں مگر فی الحال وہ اس کشیدگی کو کم نہیں کرسکے البتہ ان کی ثالثی پر کس کو اعتراض نہیں اور انہوں نے اس سے قبل بھی قطر اور دیگر خلیجی ریاستوں کے درمیان ہونیوالی کشیدگی کا معاملہ حل کیا تھا۔

یہ بھی دیکھیں

شامی فورسز کی کارروائیاں جاری ،دیر الزور کے مزید علاقے داعش سے آزاد

شامی فورسز کی کارروائیاں جاری ،دیر الزور کے مزید علاقے داعش سے آزاد

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے