ہفتہ , 21 ستمبر 2019

فلسطین میں تحریک آزادی کو دہشتگردی سے نہیں جوڑا جاسکتا، حماس ترجمان

0Pala0787

رملہ (مانیٹرنگ ڈیسک) اسلامی تحریک مزاحمت ’’حماس‘‘ نے اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو کے اس بیان کو مسترد کردیا ہے جس میں انہوں نے فلسطینی تحریک آزادی اور مزاحمت کو دہشت گردی قرار دینے کی مذموم کوشش کی تھی۔ حماس کا کہنا ہے کہ نیتن یاھو فلسطینی تحریک آزادی کو دہشت گردی سے جوڑ کر دنیا کو بے وقوف نہیں بنا سکتے ہیں۔رپورٹ کے مطابق حماس کے ترجمان سامی ابو زھری نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ نیتن یاھو فلسطینی تحریک آزادی کو دہشت گردی کی لعنت سے جوڑ کر دنیا کو گمراہ کرنے کی بھونڈی کوشش کررہے ہیں۔ دنیا جانتی ہے کہ فلسطین میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ آزادی کی تحریک ہے اور دنیا اسرائیلی وزیراعظم کی باتوں میں آْکر اسے دہشت گردی قرار نہیں دے سکتی۔حماس کے ترجمان نے کہا کہ نیتن یاھو فلسطینی تحریک آزادی کے حوالے سے عالمی رائے عامہ کو گمراہ کرنے کی کوشش میں کسی صورت میں کامیاب نہیں ہوسکتے ہیں۔سامی ابوزھری کا کہنا تھا کہ اسرائیل خود دنیا بھر میں دہشت گردی کی علامت سمجھا جاتا ہے۔ اس لیے امن پسند دنیا صہیونی وزیراعظم کی باتوں میں نہیں آئے گی۔خیال رہے کہ اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو نے حال ہی میں ایک ٹی وی انٹرویو میں فلسطینی تحریک مزاحمت اور تحریک آزادی کو عالمی دہشت گردی کا حصہ قرار دینے کی مذموم کوشش کی تھی جس پر فلسطینی حلقوں کی جانب سے شدید رد عمل سامنے آیا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب کے مہنگے امریکی ہتھیار یمنی ڈرونز کے سامنے ناکارہ ثابت:رائٹرز

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک)سعودی عرب نے امریکہ سے اپنی حفاظت کے لئے بڑے ہی مہنگے ہتھیار …