پیر , 24 جون 2019

آل سعود کا وحشیانہ تشدد ، شہید مکی العریض کے جنازے میں ہزاروں افراد کی شرکت

1

العوامیہ (مانیٹرنگ ڈیسک)سعودی عرب کے مشرقی علاقے العوامیہ کے ہزاروں افراد نے غم و غصے کی حالت میں ایک ایسے جوان کا جلوس جنازہ نکالا جو ۲۶ دن آل سعود کے مزدوروں کے زیر تشدد رہا۔العریض کے گھر والوں کے بیانات کے مطابق اس شہید کے بدن پر موجود تشدد کے نشان اس بات کی علامت ہیں کہ اسے شدید تشدد کی بنا پر شہید کیا گیا۔تفصیلات کے مطابق سعودی حکام نے 4مارچ 2016کو شہید مکی العریض کے گھر والوں کو ٹیلیفون پر بتایا کہ العریض جیل میں گرفتاری کے دو دن بعد ڈر و خوف کی وجہ سے فوت کر گیا ہے۔

2

مکی العریض کو ایسے حال میں ایک چیک پوسٹ سے گرفتار کر لیا گیا کہ وہ اپنے کام پر جا رہا تھا۔العریض کے گھر والوں کے بیانات کے مطابق اس شہید کے بدن پر موجود تشدد کے نشان اس بات کی علامت ہیں کہ اسے شدید تشدد کی وجہ سے شہید کیا گیا۔سعودی اھلکاروں نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ نفسیاتی بیماری کا شکار تھا اور جیل میں خوف کی وجہ سے جان دے گیا جبکہ اس شہید کی شائع ہوئی تصاویر اور اس کے جسم پر واضح زخموں کے نشان سعودی مزدوروں کے اس بے بنیاد دعوے کے جھوٹ کو ثابت کرتے ہیں۔واضح رہے کہ آل سعود حکومت نے رواں سال کے شروع میں ہی اس ملک کے بزرگ عالم دین آیت اللہ نمر باقر النمر کو پھانسی دی جبکہ تازہ اطلاعات کے مطابق سعودی جیلوں میں موجود تین شیعہ جوانوں کو بھی پھانسی دئے جانے کے احکامات جاری کر دئے گئے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

ایران ہرطرح کی جارحیت کا جواب دینے کے لئے تیار ہے;میجرجنرل غلام علی رشید

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک)ایران کی مسلح افواج کے خاتم الانبیا سینٹرل ہیڈکوارٹر کے کمانڈر میجرجنرل غلام …