اتوار , 7 مارچ 2021

کھانے کھاتے ہوئے سوجانے والے پراسرار مرض ’’فوڈ کوما‘‘ کی شکار خواتین

images (1)

لندن (مانیٹرنگ رپورٹ) اکثر لوگ دوپہر کا کھانا کھا کر سونا پسند کرتے ہیں لیکن کچھ خواتین ایسی ہیں جو کھانا کھاتے کھاتے سوجانے کے پراسرار مرض میں مبتلا ہیں۔خواتین کی اس پراسرار بیماری میں شام کا کھانا کھانے کے بعد بھی ان کی آنکھیں بند ہونے لگتی ہیں اور وہ سوجاتی ہیں اور پھر صبح 9 بجے ہی جاگتی ہیں۔ خاتون مرغی، سینڈوچ، چاول سبھی کچھ کھا کر نیند کی آغوش میں چلی جاتی ہیں لیکن صرف سلاد ایسی شے ہے جو انہیں فوری طور پر نہیں سلاتی۔ ڈاکٹروں کے مطابق انہیں فائبرومیلگیا یا میالگک اینسیفیلوپیتھی کا مرض لاحق ہے جس میں مریض شدید تھکاوٹ اور غنودگی کا شکار ہوجاتا ہے۔ڈاکٹروں کے مطابق یہ بیماری ’غذائی (فوڈ) کوما‘ کہلاتی ہے۔ کاربوہائیڈریٹس سے بھرپور خوراک خون میں فوری طور پر گلوکوز خارج کرتی ہیں جس سے غنودگی طاری ہوتی ہے اور آنکھیں بند ہونا شروع ہوسکتی ہیں لیکن بعض خواتین میں یہ شدت سے موجود ہوتی ہے۔ بسا اوقات مریض کا سر چکراتا ہے، دل کی دھڑکن تیز ہوجاتی ہے ، آنکھوں میں دھندلاہٹ کے ساتھ ہی شوگر بڑھ جاتی ہے اور مریض بستر کی جانب بھاگتا ہے۔ڈاکٹرز کے مطابق ایسے مریض دعوتوں اور ہوٹلوں میں بھی نہیں جاتے کیونکہ انہیں کھانا کھاتے ہی انہیں نیند آجاتی ہے۔ اسی مرض میں مبتلا ایک اور مریضہ 42 سالہ شیرون جیکسن ہیں، کھانا کھاتے ہی ان کے دماغ پر دھند چھاجاتی ہے جس سے وہ بولتے بولتے سوجاتی ہیں۔ ڈاکٹروں کے مطابق ایسےمریضوں کو میٹھے مشروبات، کیک، سفید پاستہ، سفید روٹی اور چاول نہیں کھانے چاہئیں اس لیے ایسے مریضوں کے لیے بہتر ہے کہ وہ پروٹین پر انحصار کریں۔

یہ بھی دیکھیں

لاک ڈاؤن سے پریشان ہیں تو اپنی چیخ آئس لینڈ تک پہنچائیں!

آئس لینڈ سیاحوں کے لیے اپنی تشہیر کرتا رہتا ہے اور اب اسی مہم کے …