جمعرات , 23 نومبر 2017

9/11 حملوں میں سعودی عرب کس طرح ملوث تھا؟

CNN نے حال ہی میں 11 ستمبر 2001ء کو امریکہ میں ہونے والے حملوں میں سعودی عر ب کے ملوث ہونے کے حوالے سے چشم کشا رپورٹ شائع کی ہے۔CNN نے اس رپورٹ میں امریکہ میں سعودی عرب کے سابق سفیر اور سعودی حکمران خاندان آل سعود کے فرد شہزادہ بندر بن سلطان بن عبدالعزیز آل سعود پر الزام عائد کیاہے کہ موصوف نیویارک میں ہونے والے حملوں میں ملوث تھے۔

CNNکا کہنا ہے کہ حملوں میں سعودی کردار کے حوالے تیارشدہ 28صفحات پر مشتمل سرکاری رپورٹ میں بتایا گیا ہے بندر بن سلطان کا ورلڈ ٹریڈ سنٹر پرحملہ کرنےوالے دہشت گردوں کے ساتھ بالواسطہ تعلقات تھے۔CNN نے مزید کہا ہے کہ 9/11 کے حوالے سے سرکاری رپورٹ میں کہا گیا ہےکہ القاعدہ سے تعلق رکھنے والے دہشت گرد وں کا ایک کمپنی کے ساتھ تعلقات تھے جو کہ دراصل بندربن سلطان کی ہی کمپنی ہے،نیز پاکستان میں گرفتار ہونے والے القاعدہ کے رہنما
’’ابوزبیدہ‘‘ سے ایک فون نمبروں کی ڈائری برآمد ہوئی تھی جس میں بندر بن سلطان سے تعلق رکھنے والے کئی نمبر ملے ہیں جن میں ایک نمبربندربن سلطان کی ایک کمپنی کا ہے،جب ایک دوسرا نمبر امریکہ میں سعودی سفارت سے منسلک ایک سعودی عہدیدار کا ہے۔

CNN نے اس قدر پر اکتفاء نہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ بندر بن سلطان کا تعلق اسامہ بسنان نامی شخص سے تھا جو سعودی سفارت سے منسلک تھا اور ورلڈ ٹریڈ سنٹر پر حملہ کرنے والے دہشت گردوں میں سے 2 کا تعلق اسامہ سے تھا،سرکاری دستاویزات میں بقولCNN یہ کہا جا رہا ہے کہ بسنان کو کئی مرتبہ بندر بن سلطان سے پیسے وصول ہوئے ہیں اس کے علاوہ بسنان کو بندر کی اہلیہ سے بھی رقوم موصول ہوئی ہیں ،دستاویزات کے مطابق 47 ہزار ڈالر 1999ء سے لے کر 2002ء تک بسنان کو منتقل کیے گئے ہیں اور ایک بار 15 ڈالر بندر بن سلطان کے ہی اکاؤنٹ سے ٹرانسفر کیے گئے ہیں۔

دستاویزات کےمطابق بسنان کی اہلیہ نےایک اورسعودی شخص کی اہلیہ کو پیسے ٹرانسفر کیے تھےاور یہ شخص کوئی اور نہیں بلکہ عمر البیومی ہے جس نے دہشت گردوں کو 2000ء میں سان ڈئیگو میں رہنے کے لیے مددکی تھی ۔CNN نےالقاعدہ کے گرفتار رکن زکریا الموسوی کا اعترافی بیان کا ذکر بھی کیا ہے جس نے 2014ء میں سماعت کے دوران اعتراف کیا تھا کہ بندر بن سلطان القاعدہ کی فنڈنگ کرتے رہتے تھے۔

یاد رہے کہ 11 ستمبر 2001ء کو 15 سعودی دہشت گرد سمیت 19 دہشت گردوں نے نیویارک میں ورلڈ ٹریڈ سنٹر کو نشانہ بنا کر اڑا دیا تھا،ان حملوں کو بہانہ بناتے ہوئے امریکہ نے افغانستان اورعراق پر حملہ کرکے دونوں ممالک پر قبضہ کر لیا تھا۔بشکریہ الوقت نیوز

یہ بھی دیکھیں

ٹرمپ کا لاڈلہ سعودی شہزادہ بن سلمان

ٹرمپ کا لاڈلہ سعودی شہزادہ بن سلمان