ہفتہ , 20 جولائی 2019

افغانستان، داعش نے 39 طالبان کو اغوا کر لیا، 9 کو گولی مار دی

Graphic1

پشاور/ اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) ننگر ہار میں داعش نے 39 طالبان کو یرغمال بنا لیا، 9 کو گولی مار دی۔ افغان طالبان نے دعویٰ کیا ہے کہ مارچ 2016میں کابل انتظامیہ کے 343 اہلکار وں نے اسلحہ و فوجی سازوسامان سمیت سرنڈر کیا ہے۔تفصیلات کے مطابق کرم ایجنسی کی سرحد سے ملحقہ افغان علاقے میں طالبان پاکستان اور داعش کے دہشت گردوں کی موجودگی پر تشویش میں مبتلا پاکستانی حکام نے اس ناگزیر خطرے سے نمٹنے کیلئے قبائلیوں کو متحرک کردیا۔ پارا چنار کے ایک رہائشی نے بتایا کہ رات نو بجے کے بعد شروع ہونے والی گولہ باری سے پورے علاقے میں دہشت پھیل جاتی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ داعش اور ٹی ٹی پی (سجنا گروپ) افغان صوبے پکتیا کے علاقے کیماتی میں اپنی پناہ گاہوں سے پاکستان میں کارروائیاں کرتے ہیں۔ پشاور میں ایک سکیورٹی افسر نے کرم میں ایف سی کی چیک پوسٹوں پر حملے کی تصدیق کی۔بورکی کے ایک مقامی شخص کے مطابق حکام نے بتایا کہ دولت اسلامیہ اور ٹی ٹی پی جنگجو چیک پوسٹوں پر حملوں میں ملوث ہیں۔ ذرائع کے مطابق کرم ملیشیا کے کمانڈنٹ اور نائب پولیٹیکل ایجنٹ نے خطرے کے خلاف مقامی لوگوں کو متحرک کرنے کیلئے پارا چنار کے قریب توری، بنگش اور منگل قبائل کے عمائدین سے ملاقات بھی کی۔افغان انٹیلی جنس نے کابل میں خودکش حملے کی کوشش ناکام بناتے ہوئے ایک نوعمر خودکش بمبار کو گرفتار کرلیا جبکہ ہلمند میں بم نصب کرتے ہوئے دھماکہ ہوجانے سے 3 شدت پسند ہلاک ہوگئے۔ ادھر صوبہ ہرات میں نامعلوم مسلح افراد کی طرف سے اغواء کیے گئے بارودی سرنگیں صاف کرنے والے 15 کارکنوں کو بازیاب کرالیا گیا۔ اتوار کو افغان میڈیا کے مطابق نٹیلی جنس ایجنسی این ڈی ایس نے کابل میں خودکش حملے کی کوشش ناکام بناتے ہوئے ایک نوعمر خودکش بمبار بہار الاسد کو گرفتار کرلیا۔ نوعمر خودکش بمبار کو طالبان نے خودکش حملے کیلئے بھیجا تھا۔ کارکنوںکا تعلق ہالو ٹرسٹ سے ہے۔ صوبہ غزنی کی نمائندگی کرنے والے افغان پارلیمان کے ایک رکن نے تصدیق کی ہے کہ داعش اس صوبے میں جنگجوئوں کی بھرتی میں کسی نہ کسی طرح کامیاب رہی ہے۔ مزید برآن ننگر ہار میں داعش نے 39 طالبان کو یرغمال بنا لیا، 9 کو گولی مار دی۔ افغان طالبان نے دعویٰ کیا ہے کہ مارچ 2016میں کابل انتظامیہ کے 343 اہلکار وں نے اسلحہ و فوجی سازوسامان سمیت سرنڈر کیا ہے۔دوسری جانب اقوام متحدہ نے افغانستان میں شورش پسندوں کی سرگرمیوں میں ممکنہ اضافے پر تشویش کااظہار کیا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

اب افغانستان میں امن کا ‘صحیح وقت’ ہے، اشرف غنی

کابل (مانیٹرنگ ڈیسک)افغانستان کے صدر اشرف غنی نے کہا ہے کہ اب افغانستان میں امن …