بدھ , 13 دسمبر 2017

ایران کی سرد مزاجی اور حسن روحانی کا موزوں خطاب

(تسنیم خیالی ؔ)
اقوام متحدہ میں جہاں ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے خطاب کے دوران اقوام متحدہ کی دھجیاں اُڑاتے ہوئے شمالی کوریا کوتباہ کرنے اور نیزویلا پر مزید پابندیاں عائدکرنے کی دھمکی دی اور ایران کو دہشت گردی کو فروغ دینے والا ملک قرار دیتے ہوئے ایران کیساتھ 2015ءمیں طے پانے والے جوہری معاہدے کو ختم کی دھمکی دی ،وہیں ایرانی صدر حسن روحانی کا خطاب انتہائی موزوں،باادب اور معقول رہا جس میں ایران کی سرد مزاجی نمایاں تھی۔

حسن روحانی نےاپنے خطاب واضح کیا ہے کہ ایران کیساتھ طے پایا جانیوالےجوہری معاہدے میں روس، چین، برطانیہ ،فرانس اور جرمنی شامل تھے اور اقوام متحدہ نے اس معاہدے کی تصدیق کی تھی ۔حسن روحانی نے یہ بھی واضح کیا ہے کہ ایران تمام تر آپشنز کیلئے تیار ہے اور اس بات کیلئے بھی تیار ہے کہ امریکہ یہ جوہری معاہدہ منسوخ کردے۔

اس بات پر کوئی اختلاف نہیں کہ معاہدہ منسوخ ہونے سے سب سے زیادہ نقصان امریکہ کو ہی ہوگا ،یہ بات درست ہے کہ ایران پھر سے پابندیوں کی زد میں آجائیگا، مگر ایرانیوں نے گزشتہ دہائیوں میں یہ ثابت کردیا ہے کہ وہ پابندیوں کا مقابلہ کرسکتے ہیں اور اُن پر مزید پابندی انہیں مزید مضبوط کردےگی۔

امریکہ کےنقصانات کی بات کی جائے تو جوہری معاہدے کی منسوخی سے امریکہ کی مصداقیت کو نقصان پہنچے گا اور امریکہ ایک قابل اعتماد ملک نہ رہےگا اور امریکہ سے مستقبل میں کوئی بھی ملک کسی قسم کا معاہدہ نہیں کریگا۔

علاوہ ازیں اس معاہدے میں روس، چین ،برطانیہ ،فرانس اور جرمنی ہیں اور یہ تمام ممالک ایران کیساتھ طے پایا جانیوالے جوہری معاہدے کے حامی ہیں اور اسے ایک اہم اور تاریخی معاہدہ قرار دے رہے ہیں اور کسی بھی صورت معاہدے کی معطلی کو برداشت نہیں کریں گے،لہذا جب امریکہ اپنی طرف سے معطل کرےگا ،تب ان ممالک اور امریکہ کے درمیان شدید اختلافات قائم ہوجائینگے اور امریکہ اور ان ممالک کے درمیان ایک خلیج قائم ہوجائیگی۔

ٹرمپ نے اقوام متحدہ میں صحافیوں سے یہ کہہ دیا ہے کہ انہوں نے ایران کے ساتھ طے پانیوالے جوہری معاہدے کے حوالے سے اپنا فیصلہ کرلیا اور جلد اس فیصلے کا اعلان کرینگے ،ٹرمپ ضرور فیصلہ کریں اور جب چاہے اعلان بھی کریں مگر انہیں یہ یاد رکھنا چاہیے کہ اُن
کے فیصلوں سے ایران کو فرق نہیں پڑتا، اگر فرق پڑتا ہے تو وہ امریکہ ،روس، چین ،برطانیہ، فرانس ،جرمنی، یورپی یونین اقوام متحدہ کو پڑےگا کیونکہ یہ سب معاہدے میں شامل ہیں اور سب سے زیادہ فرق امریکہ کو ہی پڑےگا۔

 

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب: سینما کی واپسی کا سفر

سعودی عرب میں سینما ہالز پر پابندی ختم کرنے کا اعلان (ویڈیو پیکج) سعودی عرب ...