منگل , 12 دسمبر 2017

عراقی وزیراعظم حیدر العبادی کی زندگی کی مختصر داستان

تاریخ پیدائش : 25اپریل 1952ء
جائے پیدائش : عراقی دارالحکومت بغداد
تعلیم : حیدر العبادی نے 1970ء میں بغداد کے ہائی سکول سے گریجویشن حاصل کی، 1975ء میں العبادی نے بغداد میں واقع یونیورسٹی آف ٹیکنالوجی سے الیکٹریکل انجینئرنگ میں بیچلر کی سند حاصل کی اور 1980ء میں اسی شعبے میں ’’یونیورسٹی آف مانچسٹر سے ڈاکٹریٹ کی سند حاصل کی۔

عملی زندگی:
1967ءکو العبادی نے ’’اسلامی دعوت پارٹی‘‘میں شمولیت اختیار کی جوکہ سابق عراقی ڈاکٹیٹر صدام حسین کی مخالف سیاسی جماعت تھی ۔’’اسلامی دعوت پارٹی ‘‘سے منسلک ہونے پر العبادی کے دو بھائیوں کو صدام دور میں قتل کردیا گیا جبکہ تیسرے بھائی کو جیل میں قید کردیا گیا۔

1977ء کو لندن میں حصول تعلیم کے دوران العبادی کو ’’اسلامی دعوت پارٹی‘‘ کاسربراہ مقرر کیا گیا۔
1979ءکو صدام کی حکومت نے حکمران جماعت ’’البعث‘‘کے خلاف سازش کے الزام میں العبادی کا پاسپورٹ ضبط کر لیا۔
2003ءمیں عراق کو ایاد علاوی کی زیر قیادت نگران حکومت کا قیام عمل میں آیا۔ اس حکومت میں حیدر العبادی وزیر مواصلات کے منصب پر فائز تھے۔

2005ءمیں حیدر العبادی رکن عراقی پارلمنٹ منتخب ہوئے ۔

2014ءکے انتخابات کے بعد حیدر العبادی کو ڈپٹی سپیکر عراقی پارلمنٹ مقرر کیا گیا اور 11اگست 2014ء کو عراقی صدر فواد معصوم نے حیدر العبادی کو نئی کابینہ تشکیل دینے کا کہا جس پر سابق وزیر اعظم نوری المالکی نے اعتراض کرتے ہوئے خود کو عراقی وزیر اعظم بننے کا حقدار قراردیا ۔کچھ دنوں بعدنوری المالکی حیدر العبادی کے حق میں دستبردار ہوگئے جس کے بعد حیدر العبادی اپنی کابینہ تشکیل دی۔

حیدر العبادی کے دور میں عراق کے ایک وسیع رقبے پر قابض دہشت گرد تنظیم داعش کیخلاف کاروائی کا آغاز کیا گیا یہ کاروائیاں آج بھی جاری ہے اور ملک میں اب داعش کا خاتمہ قریب ہوگیا ہے۔

حیدر العبادی کے موجودہ دور میں داعش کے قبضے سے عراق کا دوسرا بڑا شہر ’’موصل‘‘کو آزاد کیا گیا، موصل کے علاوہ تلعفر ،فلوجہ ،القیارہ ،حمام العلیل جیسے اہم اور اسٹریٹجک علاقوں بھی داعش سے آزاد کرایا گیا۔

یہ بھی دیکھیں

صدام،قذافی اور صالح کا ایک جیسا انجام

صدام،قذافی اور صالح کا ایک جیسا انجام