جمعہ , 24 نومبر 2017

ایران کی دفاعی اور سیاسی قیادت ایک پیج پر ہے;جنرل محمد علی جعفری

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک) سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے کے کمانڈر نے کہا ہے کہ ایران کی طاقت و عظمت یکساں دفاعی اور سفارتی موقف کی مرہون منت ہے۔سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے کمانڈر جنرل محمد علی جعفری نے اسلامی انقلاب کی کامیابی کی چالیسیویں سالگرہ کے پروگراموں سے متعلق کوآرڈینیشن اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دشمنوں کے خلاف موقف کا اعلان کرتے وقت ایران کے سبھی دفاعی، فوجی اور سیاسی اداروں میں پوری ہم آہنگی پائی جاتی ہے ہرچند بیانات کے الفاظ الگ الگ ہوں۔

سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے کمانڈر نے کہا کہ ایران کے سیاسی، دفاعی اور سماجی میدانوں میں ایران کی توانائی بہت ہی اعلی سطح کی ہے۔ سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے کمانڈر نے ایٹمی معاہدے اور سپاہ کے خلاف امریکا کے ممکنہ اقدام کے ردعمل میں کہا کہ امریکا کے ممکنہ اقدام کا جواب دینے کے لئے ایران کے پاس سیاسی دفاعی اور سماجی میدانوں میں مناسب توانائی موجود ہے اور ایران کی وزارت خارجہ اور دفاعی اداروں کا موقف بالکل ایک جیسا ہے۔

اس اجلاس میں وزیرخارجہ محمد جواد ظریف نے بھی کہا کہ ایران کی دفاعی توانائیوں پر کسی سے مذاکرات نہیں ہوسکتے۔ وزیرخارجہ نے کہا کہ مغرب والے اس بات کو اچھی طرح جانتے ہیں اور ایٹمی معاہدے میں بھی یہ واضح ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اپنے دفاعی معاملات کے بارے میں مذاکرات نہیں کرے گا۔

وزیرخارجہ جواد ظریف کا کہنا تھا کہ جن ملکوں نے مغربی ایشیا کے علاقے میں ہتھیاروں کو فروخت کرنے کے لئے اس علاقے کو ہتھیاروں اور گولہ بارود کے انبار میں تبدیل کر دیا ہے انہیں اپنے ان اقدامات کا جواب دہ ہونا ہوگا اور اپنی پالیسیاں تبدیل کرنی ہوں گی۔

ایران کے وزیرخارجہ محمد جواد ظریف نے دہشت گردگروہوں کی فہرست میں سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کا نام شامل کرنے کے تعلق سے امریکا کے ممکنہ اقدام کے بارے میں خبردار کیا اور کہا کہ اگر امریکی حکام نے اس طرح کی اسٹریٹیجک غلطی کی تو اسلامی جمہوریہ ایران اس کا بھرپور جواب دے گا اور ان اقدامات کا مناسب وقت پر جواب دیا جائے گا۔

بین الاقوامی امور میں رہبرانقلاب اسلامی کے مشیر ڈاکٹرعلی اکبر ولایتی نے بھی اس بات کا ذکرکرتے ہوئے کہ امریکا علاقے میں سپاہ پاسداران کے کردار سے آگاہ ہے کہا کہ اگر سپاہ کا مشاورتی کردار نہ ہوتا عراق اور شام میں جہاں اس وقت عوام کے ووٹوں سے منتخب کی ہوئی حکومتیں برسراقتدار ہیں نہ ہوتی بلکہ بغداد اور دمشق میں امریکا کے آلہ کار دہشت گرد گروہ داعش کے افراد اقتدار میں ہوتے۔

اس اجلاس کے بعد سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے کمانڈر جنرل جعفری نے نامہ نگاروں سے بھی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سفارتی اور دفاعی میدانوں میں ایران کے سبھی اداروں کا موقف ایک جیسا ہے۔ شسپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے کمانڈر نے ایران کی سفارتی اور دفاعی موقف کے یکساں ہونے پر تاکید کرتے ہوئے امریکی صدر کو مخاطب کرکے کہا کہ مسٹرٹرمپ کو مطمئن رہنا چاہئے کہ ہم اپنی وزارت خارجہ اور حکومت کے ساتھ ایک جان دوقالب ہیں اور تمام معاملات میں ہمارے نظریات اور موقف ایک جیسے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب میں اسلامی افواج کے اتحاد کی افتتاحی تقریب

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) دہشت گردی کے خلاف جنگ کے لیے سعودی عرب کی سربراہی میں ...