جمعرات , 23 نومبر 2017

امیر کویت کا حالیہ دورہ سعودی عرب پر کچھ بات کی جائے

(تسنیم خیالیؔ)
امیر کویت شیخ صباح الاحمد الجاہر الصباح نے گزشتہ پیر کے روز سعودی عرب کا ایک مختصر (مگر اہم )دورہ کیا تھا جہاں ان کی ملاقات سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز سے ہوئی۔ اس موقع پر شیخ صباح کے اعزاز میں ظہرانہ دیا گیا جس میں بڑی تعداد میں سعودی شہزادے ،وزراء اور دیگر اور اکابرین نے شرکت کی، اس ظہرانہ میں قابل غور بات یہ تھی کہ سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان شرکت کیلئے موجود نہیں تھے۔

ان تمام معاملات سے قبل سوشل میڈیا پر کویتیوں کو اس بات پر حیرانگی ہوئی تھی کہ سعودی عرب کے دورے پر جانیوالے امیر کویت کے استقبال کیلئے شاہ سلمان خود موجود نہیں تھے اور استقبال صوبہ ریاض کے امیر شہزادہ فیصل بن بندر بن عبدالعزیز نے کیا، جسے بہت سے کوتیوں نے کویت اور کویتی امیر کی بے عزتی قرار دیا۔ دورے کے حوالے سے کویتی ذرائع کا کہنا ہے کہ امیر کویت اپنے اس دورے میں کویت میں آئندہ ماہ دسمبر میں شیڈولڈ خلیج کونسل سربراھان کے اجلاس کے حوالے سے بات چیت کی ،علاوہ ازیں قطر کے بائیکاٹ کے معاملے پر بھی گفت و شنید ہوئی۔

کویت ذرائع نے مزید انکشافات کرتے ہوئے کہا ہے کہ دسمبر کے اجلاس اور عام طور پر خلیج کونسل کے حوالے سے 4امکانات ہوسکتے ہیں۔

پہلا یہ کہ اس اجلاس کو چند مہینوں کیلئے ملتوی کردیا جائے تاکہ قطر کے بائیکاٹ کا معاملہ کسی نتیجے پر پہنچے ،صلح صفائی، ہمیشہ کیلئے ناراضگی یا پھر قطر کے نظام میں تبدیلی۔

دوسرا یہ کہ اجلاس سعودی عرب میں بغیر قطر کے شرکت کے منعقد ہو۔

تیسرا یہ کہ اجلاس کویت میں ہی منعقد ہومگر قطر کو شرکت کیلئے مدعونہ کیا جائے۔

چوتھا یہ کہ خلیج کونسل 2حصوں میں تقسیم ہوجائے جہاں پہلے حصے میں قطر کیساتھ عمان ہو اور دوسرے حصے میں سعودی عرب، امارات اور بحرین ایک ساتھ ہوں،جبکہ کویت غیر جانبدار ہو۔جس کا مطلب یہ ہوگا کہ گزشتہ دسمبر کو بحرین میں منعقد ہونے والا خلیج کونسل کا اجلاس اپنی روایتی صورت میں آخری اجلاس تھا۔

ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ اجلاس اور عام طور پر خلیج کونسل کے انجام کے بارے میں بات کرنا قبل از وقت ہوگا کیونکہ اوپر بتائے گئے امکانات میں کسی ایک کو ترجیح دینا بہت مشکل ہے کیونکہ امیر کویت کے دورے کے حوالے سے نہ کویت اور ناہی سعودی عرب نے کسی بھی قسم کا بیان جاری کیا ہے، البتہ زیادہ رجحان یہی ہے کہ دسمبر کا اجلاس چند ماہ کیلئے ملتوی کردیا جائیگا کیونکہ کویت خلیج کونسل کو ختم ہونے سے بچانا چاہتا ہے اور یہ بھی نہیں چاہتا کہ اجلاس میں کسی رکن ملک کو شرکت سے روکا جائے۔

یہ بھی دیکھیں

الوداع‘ چین کو الوداع

(محمد اسلم خان….چوپال) ہزار سالہ تاریخ گواہ ہے چین کے کبھی جارحانہ اور توسیع پسندانہ ...