جمعرات , 23 نومبر 2017

بن سلمان کا ولی عہد کون؟شاہ سلمان نے اپنی وصیت میں بتا دیا!

(تسنیم خیالیؔ)
سعودی عرب کے بانی عبدالعزیز آل سعود نے جب 1932ء میں اپنی مملکت کے قیام کا اعلان کیا تھا تب انہوں نے اس مملکت کا نام اپنے خاندان ’’سعود‘‘کے نام پر ’’سعودی‘‘رکھا اور اپنے بعد اپنے بیٹوں کو حکومت دیتے ہوئے کہا وہ ایک کے بعد دیگر’’سعودی عرب‘‘کے بادشاہ بنیں۔ عبدالعزیز آل سعود کے بعد یہی ہوا ان کے بیٹے عمر کے حساب سے (بڑے کے بعد اُس سے چھوٹا‘‘بادشاہ بنتے گئے اور آج سلمان بن عبدالعزیز آل سعود سعودی فرمانروا ہیں۔

مگر شاہ سلمان نے اپنے والد کی وصیت کی نافرمانی کرتے ہوئے اپنے بیٹے محمد کو اپنا ولی عہد مقرر کیا حالانکہ ابھی بانی سعودی عرب کے متعدد بیٹے زندہ ہیں حسن احمد اور مقرن قابل ذکر ہیں۔

شاہ سلمان کا اپنے بیٹے کو ولی عہد مقرر کرنے کے بعد سوالات اٹھنا شروع ہوگئے تھے کہ اگر محمد بن سلمان سعودی عرب کے بادشاہ بنتے ہیں تو ان کا ولی عہد کون ہوگا؟

اس سوال کا جواب امریکی رسالہ ’’دی اٹلانٹک‘‘نے حال ہی اپنی رپورٹ میں دیتے ہوئے انکشاف کیا ہے کہ شاہ سلمان نے اپنے بیٹے محمد کیلئے بادشاہت کی راہ ہموار کرنے کے بعد اپنے دوسرے بیٹے خالد کو محمد بن سلمان کا ولی عہد بنانے کیلئے کہا ہے۔

امریکی رسالے کے مطابق شاہ سلمان نے اپنا وصیت نامہ تیار کردیا جس میں انہوں نے مستقبل کیلئے سعودی حکومت کا خاکہ تیارکیا ہے۔وصیت کے مطابق شاہ سلمان نے اپنے بیٹے خالد کو محمد کا ولی عہد مقرر کررہے ہیں تاکہ حکومت ان کے اولاد میں ہو اور باقی آل سعود کی شاخوں کو دور رکھ جائے۔ یہی وجہ تھی کہ شاہ سلمان نے اپنے بیٹے خالد کو امریکہ میں سعودی سفیر مقرر کیا تاکہ وہ تجربہ حاصل کرنے کیساتھ ساتھ امریکیوں کا اعتماد اور حمایت حاصل کرے۔

یہی نھی شاہ سلمان کے اس منصوبے کے تھت نایف بن عبدالعزیز کی شاخ کو وزارت داخلہ سے بے دخل کردیا اور وزارت داخلہ کے تمام اداروں کو بادشاہ کے ماتحت کردیا، اب شاہ سلمان اور ان کے بیٹوں کی نظر نیشنل گارڈ فورسز پر ہے جس کی سربراہی شاہ عبداللہ کے بیٹے متعب کررہے ہیں۔شاہ سلمان اور ان کے بیٹوں کیلئے ضروری ہے کہ نیشنل گارڈ فورس کو وزارت دفاع سے منسلک کیا جائے جو وزیر دفاع یعنی محمد بن سلمان کے ماتحت ہوجائیگی ۔سعودی عرب پر کنٹرول ان کی نسل کا ہو اور انہی کے خاندان سے مستقبل میں سعودی بادشاہ مقرر ہوں اور سعودی عرب "سلمانی عرب” یا پھر” سعودی سلمانی عرب” کہلایا جائے۔

اب کیا شاہ سلمان اپنے منصوبے میں کامیاب ہوجائینگے ؟کیا باقی آل سعود کی شاخیں خاموش رہینگے یا ان کے خلاف اُٹھ کھڑے ہونگے؟ان کا سوالوں کا جواب آنیوالے وقت نے دینا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ختم نبوت ترمیم زاہد حامد کا نہیں پوری انتخابی اصلاحات کمیٹی کا فیصلہ تھا، رپورٹ

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) راجا ظفرالحق کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ حلف نامے ...