جمعرات , 23 نومبر 2017

امریکہ کا وہ بہانہ جس نے دنیا کو تباہ کررکھا ہے

(تسنیم خیالیؔ)
امریکہ بھی ایک عجیب بلا کا نام ہے جس نے ایک بہانے کے ذریعے پوری دنیا کو تباہ کردیا ہے۔ آپ کو یاد ہوگا کہ 11ستمبر 2001ء کے واقعے کے بعد امریکہ نے اس واقعے کو دہشت گردی کے خلاف اپنی نام نہاد جنگ کیلئے استعمال کرتے ہوئے پہلے افغانستان اور پھر عراق پر قبضہ کیا۔

اسی طرح امریکہ نے 2001ء سے لیکر اب تک کئی مرتبہ شور مچایا ہے کہ امریکہ میں 2001ء کے طرز کے حملے کی تیاری کی جارہی ہے اور اپنے اس شور کو مصداقیت بخشی کیلئے امریکہ کہتا رہتا ہے کہ یہ معلومات امریکی سکیورٹی اداروں کی طرف سے جاری ہو رہے ہیں۔

امریکہ نے جس کے خلاف جنگ کرنی ہو پہلے وہ اُسے امریکہ کی سلامتی کیلئے خطرہ قراردیتا ہے اور اگر بات ہوکسی تنظیم کی تو امریکہ اُس پر امریکہ میں حملے کرنے کی تیاری کا الزام لگاتا ہے۔

مضحکہ خیز بات یہ ہے کہ جن تنظیموں پر امریکہ اس قسم کے الزامات عائد کرتا ہے وہ خود امریکہ پیداوار ہیں جیسا کہ القاعدہ ،طالبان یا پھر داعش ۔۔۔۔

حال ہی میں بھی امریکہ نے اپنے اس معروف بہانے کا شور مچالیا ہے،امریکن وزیر داخلہ الین ڈاک نے گزشتہ جمعرات کو خبردار کیا ہے کہ امریکہ میں 9/11طرز کے حملوں کی تیاری کی جاری ہے اور یہ حملے دہشت گرد تنظیم داعش کی سرپرستی میں ہونگےاور امریکی انٹیلی جنس اداروں کی اس حوالے سے معلومات بالکل واضح ہیں۔حیرانگی ہوتی ہے اس بات پر کہ امریکہ کو یہ سب کچھ پہلے کیوں پتا چل جاتا ہے ؟کیوں کسی اور امریکہ اتحادی ملک کو علم نہیں ہوتا اس بات کا؟

ہوسکتا ہے کہ امریکہ کو یہ معلومات کسی ’’چڑیا‘‘سےملتی ہو یا پھر ہوسکتا ہے کہ امریکہ ’’شوشے ‘‘چھوڑتا ہے۔اگر شوشے چھوڑتا ہے تو پھر سوال یہ ہے کہ ایسے شوشے چھوڑنے کےپیچھے مقصد کیا ہے؟

سب سے پہلے تو امریکہ ان شوشوں کے ذریعے دنیا بھر کے نظروں میں مظلوم بن جاتا ہے، گویا دہشت گرد تنظیمیں واقعی امریکہ کی دشمن ہے۔

دوسری حقیقت یہ ہے کہ امریکہ اس طرح کے شوشوں کے ذریعے دنیا کی توجہ کسی بات سے ہٹانے کی کوشش کرتا ہے اور میرے خیال میں امریکہ دُنیا کی توجہ رقہ سے ہٹانا چاتا ہے جسے کردی فورسز نے امریکیوں کی مدد سے حال ہی میں داعش سے آزاد کیا ہے ،وجہ يہ ھے امریکہ نےکردوں کیساتھ ملکر شامی شہر الرقہ کو تباہ کردیا۔

امریکہ نے رقہ آپریشن کے ذریعے اپنے اتحادیوں کیساتھ ملکر ایک طرف شھرکو برباد کیا اور دوسری جانب اپنے طیاروں کے ذریعے ہزاروں شہریوں کو موت کے گھاٹ اُترا۔
علاوہ ازیں رقہ میں داعش کیخلاف جنگ کافی حد تک مشہور ہیں کیونکہ امریکہ نے آپریشن کے ختم ہونے سے قبل رقہ میں موجود داعش کے کمانڈوز کو خود شہر سے نکالتے ھوۓ محفوظ مقام پر پہنچایا ۔

امریکہ نے دہشت گردی کیخلاف جنگ میں اپنے دوغلے کردار کو چھپانے کیلئے یہ بہانے بناتا ہے کہ امریکہ میں دہشت گردکاروائیاں کرنے کے درپے ہیں اور جب کبھی امریکہ اس بہانے کا شور مچائے تو سمجھ لیں کہ کوئی نئی کھچڑی بنا رہا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

الوداع‘ چین کو الوداع

(محمد اسلم خان….چوپال) ہزار سالہ تاریخ گواہ ہے چین کے کبھی جارحانہ اور توسیع پسندانہ ...