جمعرات , 23 نومبر 2017

بڑھاپے کی جانب سفر سست کردینے والا سپر فوڈ

نیویارک (مانیٹرنگ ڈیسک) بڑھاپا تو ایسی چیز ہے جس کو آنے سے روکنا کسی کے بس کی بات نہیں، تاہم اس کی رفتار کو آپ اس مخصوص غذا کا استعمال بڑھا کر کافی حد تک کم کرسکتے ہیں۔یہ دعویٰ امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا۔پین اسٹیٹ یونیورسٹی کی تحقیق کے مطابق مشروم اینٹی آکسائیڈنٹس سے بھرپور ہوتے ہیں جو عمر بڑھنے سے جسم میں آنے والی تنزلی کے خلاف جدوجہد کرنے اور مجموعی صحت کو بہتر بناتے ہیں۔تحقیقمیں یہ بات بھی سامنے آئی کہ مشروم میں ایسے اجزاءکافی مقدار میں ہوتے ہیں ۔

جو جسم میں جاکر اینٹی آکسائیڈنٹس کو اپنا کام کرنے میں مدد دیتے ہیں۔تحقیق کے مطابق جب جسم غذا کو توانائی پیدا کرنے کے لیے استعمال کرتا ہے تو اس کے نتیجے میں تکسیدی تناﺅ پیدا ہوتا ہے جو کہ جسم کے لیے نقصان اجزاءکو تشکیل دیتا ہے جو کہ خلیات، پروٹین اور ڈی این اے کو نقصان پہنچاتے ہیں۔اس کے مقابلے میں اینٹی آکسائیڈنٹس جسم کو اس تکسیدی تناﺅ کے نقصانات سے بچانے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔محققین کا کہنا تھا کہ جسم میں گردش کرنے والے مضر اجزاءیا فری ریڈیکل بڑھاپے کی جانب سفر تیز کرتے ہیں۔

اور عمر بڑھنے سے مختلف امراض جیسے کینسر،امراض قلب یا الزائمر کا باعث بھی بن جاتے ہیں۔تحقیق کے مطابق مشروم میں موجود دو قسم کے اینٹی آکسائیڈنٹس اس عمل کو سست کرکے بڑھاپے کی جانب سفر کو سست کردیتے ہیں یا آسان الفاظ میں جوانی کے اثرات کو تادیر برقرار رکھتے ہیں۔محققین کا کہنا تھا کہ اس حوالے سے مزید تحقیق کی ضرورت ہے کہ مشروم کو کھانا پارکنسن اور الزائمر امراض کی روک تھام میں کتنا مددگار ثابت ہوتا ہے، تاہم جن ممالک میں اسے کھایا جاتا ہے وہاں دماغی عوارض کی شرح دیگر کے مقابلے میں کافی کم ہے۔

یہ بھی دیکھیں

گری دار میوے کے دماغ پر مفید اثرات

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) روزانہ گری دار میوہ جیسے مونگ پھلی اور پستہ کو اپنی ...