جمعرات , 23 نومبر 2017

ایم کیو ایم رینجرز ہیڈ کوارٹرز میں بنتی تو ان پر مقدمات نہ چلتے،ڈی جی رینجرز

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) ڈی جی رینجرز میجر جنرل محمد سعید کا کہنا ہے کہ ایم کیو ایم پاکستان اگر رینجرز ہیڈ کوارٹرز میں بنتی تو ان پر مقدمات نہ چلتے۔ڈی جی رینجرز میجر جنرل محمد سعیدنے ایک نجی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے صاف صاف بتا دیا کہ اسٹیبلشمنٹ اور انٹیلی جنس ایجنسیز کراچی میں تمام اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ رابطے میں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پی ایس پی اورایم کیو ایم پاکستان کا معاہدہ ہوجائے تو کوئی حرج نہیں،ان دونوں جماعتوں کو بتا دیا ہےکہ چاہے کیسی بھی سیاست کریں لیکں خون ریزی، بھتہ خوری اور تشدد کی سیاست نہیں ہونی چاہئے۔میجر جنرل محمد سعید نے کہا کہ 22 اگست کو میڈیا ہاؤس پر حملے کے تمام ملزمان گرفتار کئے گئے ۔

ڈی جی رینجرز نے مزید کہا کہ سیاسی نمائندوں سے تو ستمبر 2013 میں بھی بات ہوتی تھی اوراسٹیبلشمنٹ کے جو نمائندے 2013 میں تھے وہی اب بھی ہیں۔انہوں نے کہا کہ کراچی کسی صورت بھی ماضی کی پرتشدد سیاست کی جانب نہیں جانا چاہئے۔

میجر جنرل محمد سعید نے کہا کہ ادارے کے طور پر کوئی پالیسی گائیڈ لائن انہیں نہیں دی جاتی اور کسی سیاسی انجینئرنگ کی بات بھی غلط ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم اگر رینجرز کے ہیڈکوارٹرز میں بنتی تو اس کیخلاف کیسز نہ ہوتےایم کیو ایم پر دائرمقدمات سے ایک قدم پیچھے نہیں ہٹے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

شام میں قیام امن کے بارے میں ایران ، روس اور ترکی کے فوجی سربراہان کی ملاقات اور گفتگو

ترک فوج کے چیف آف اسٹاف کے دفتر کی طرف سے جاری ہونے والے بیان ...