جمعرات , 23 نومبر 2017

لبنان۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔کچھ تو ہونے جارہا ہے

(تسنیم خیالی!)
سعودی عرب میں لبنانی وزیراعظم سعد الحریری سے زبردستی استعفیٰ لینے کے بعد معاملات سنگینی کے طرف بڑھتے جارہے ہیں۔اس بات کا اندازہ آپ یوں لگا سکتے ہیں کہ سعودی عرب نے لبنان میں موجود سعودی شہریوں کو جلد از جلد لبنان سے نکل جانے کی ہدایات جاری کر دی ہیں۔کویت نے بھی سعودی اقدام کو دیکھتے ہوئے لبنان میں موجود اپنے شہریوں کو بھی لبنان سے نکل جانے کا حکم جاری کر دیا ہے۔

ان اقدامات کو دیکھتے ہوئے یوں لگ رہا ہے کہ لبنان میں کچھ ہونے جارہا ہے ،سعودی عرب کی حزب اللہ سے دشمنی ڈھکی چھپی بات نہیں اور ممکن ہے کہ سعودی عرب سعدالحریری سے زبردستی استعفیٰ لینے کے بعد اس اقدام سے پیدا ہونے والے منفی اثرات کا ملبہ حزب اللہ پر ڈالنا چاہتا ہے جس کے بعد لبنان میں متعدد تجزیہ نگاروں کے مطابق ایک نئی خانہ جنگی شروع ہوسکتی ہے۔

لبنان میں حزب اللہ کی پوزیشن کے حوالے سے بات کی جائے تو اس بات میں کوئی شک نہیں کہ لبنان میں حزب اللہ بہت ہی مقبول جماعت ہے ،البتہ اس حقیقت کا یہ مطلب نہیں کہ لبنان میں حزب اللہ کے مخالفین نہیں ہیں۔

لبنان میں حزب اللہ کے مخالفین در اصل سعودی عرب کے اتحادی ہیں جن کے ذریعے سعودی عرب نے ہمیشہ سے لبنان کو غیر مستحکم حالات میں رکھا اور اب بھی سعودی عرب سعد الحریری سے استعفیٰ لینے کے بعد یہی سب کچھ کر رہا ہے۔

لبنان پر نظر رکھنے والے تجزیہ نگاروں کے ایک گروپ کا ماننا ہے کہ سعد الحریری کے استعفے کے بعد ممکن ہے کہ اسرائیل اور لبنان کی جنگ شروع ہو جس کا اصل مقصد حزب اللہ کو تباہ کرنا ہوگا اور ممکن ہے کہ اس جنگ میں کسی طرح ایران کو بھی کھینچا جائے جس کے بعد ایک بڑی جنگ کا خطرہ منڈلاتا دکھائی دیتا ہے۔

بعض تجزیہ نگاروں کا یہ بھی ماننا ہے کہ ممکن ہے کہ سعودی عرب اور امریکہ مل کر لبنان میں حزب اللہ کے ٹھکانوں پر حملہ کریں جس کے لئے یونان میں واقع امریکی اور نیٹو فوجی اڈوں کا استعمال کیا جائے،ایسی صورت میں علاقے میں ایک نئی جنگ شروع ہو جائے گی جس میں ایک طرف حزب اللہ کے ساتھ لبنان ،شام اور ایران ہوں گے جبکہ دوسری طرف سعودی عرب ،امریکہ،اسرائیل اور ان کے اتحادی ہوں گے جبکہ روس بھی اس جنگ میں حزب اللہ کی لاجسٹک سپورٹ کرے گا۔

بلاشبہ لبنان کی صورتحال انتہائی نازک ہوچکی ہے اور کسی بھی وقت کچھ بھی ہوسکتاہے،جس کے لیے سبھی کو تیار رہنا ہوگا خواہ وہ خانہ جنگی ہو یا حزب اللہ پر مخالفین کا حملہ ہو،کیونکہ سعد الحریری کے استعفے کے بعد لبنان پہلے جیسا نہیں رہا۔

یہ بھی دیکھیں

الوداع‘ چین کو الوداع

(محمد اسلم خان….چوپال) ہزار سالہ تاریخ گواہ ہے چین کے کبھی جارحانہ اور توسیع پسندانہ ...