منگل , 12 دسمبر 2017

ایران نے مشرق وسطیٰ میں فتح حاصل کر لی

(تسنیم خیالی)
عراق اور شام میں دہشت گردی کے عروج میں سب سے زیادہ خطرہ ایران کو لاحق ہو رہا تھا،ایران میں تباہی مچانے کیلئے سعودی عرب،قطر،ترکی ،اردن،اسرائیل،امریکہ اور یورپی ممالک نے عراق اور شام میں سرگرم دہشت گرد تنظیموں کی بھر پور مدد کی تاکہ یہ تنظیمیں عراق اور شام پر مکمل قبضہ جمانے کے بعد ایران کا رخ کریں۔البتہ ایران نے ان ممالک کے ناپاک منصوبے کو نیست و نابود کرتے ہوئے علاقے میں فروغ پانے والی دہشت گردی کو شکست دی۔

ایران نے عراق اور شام میں حکومتی افواج اور سیکیورٹی فورسز کے شانہ بشانہ کھڑے ہو کر ساتھ دیا اور ایک تیر سے دو شکار کی مثال کا عملی مظاہرہ کیا۔ایک تو ایران نے ان ممالک کی دہشت گردی سے نجات میں اہم کردار ادا کیا اور یہ بتایا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ کس طرح لڑی جاتی ہے۔
دوسرا یہ کہ ایران نے اپنے آپ کو دہشت گردی کے منڈلاتے خطرات سے نجات دلائی ، کیونکہ عراق اور شام کی تباہی کے بعد ایران کی باری آرہی تھی۔اس طرح علاقے میں داعش اور دیگر دہشت گرد تنظیموں کی شکست کے بعد ایران نے بڑے بڑوں کو شکست دیتے ہوئے مشرق وسطیٰ میں فتح حاصل کی۔

ایران نے سپریم لیڈر آیت اللہ العظمیٰ سید علی خامنہ ای کی قیادت میں آل سعود کی بادشاہت،آل ثانی کی ریاست ،اردگان کی آمریت کے سائے میں چلنے والی جمہوریت،نیتن یاہو کی غاصب صیہونی ریاست،ٹرمپ کی مضحکہ خیز جمہوریت اور یورپیوں کے نام نہاد اتحاد کو شکست دی اور مشرق وسطیٰ میں خود کو ایک مضبوط طاقت کے طور پر پیش کردیا ہے۔

اب عراق اور شام میں دہشت گرد تنظیموں کی شکست کے بعد سعودی عرب اور اس کے ملک میں چلنے والے تمام ایران دشمن ممالک ایک نئی چال ضرور چلیں گے اور ایران سے اپنی ذلت آمیز شکست کا بدلہ لینے کی کوشش کریں گے۔مگر ایران پھر انہیں شکت دینے میں کامیاب ہوجائے گا کیونکہ ایران کی پالیسیاں واضح ہیں ۔مخالفوں کی طرح دوغلی نہیں جنہوں نے ایک طرف دہشت گردی کے خلاف جنگ کا واویلا مچایا اور دوسری طرف دہشت گردی کی ہر حوالے سے پشت پناہی کی۔

فی الحال تو ایران اپنی فتح یابی کی خوشیاں منائے ، دیکھتے ہیں کہ شکست خوردہ مخالف ممالک علاقے میں مزید تباہی کیلئے کونسا نیا حربہ یا نئی چال استعمال کرتے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب: سینما کی واپسی کا سفر

سعودی عرب میں سینما ہالز پر پابندی ختم کرنے کا اعلان (ویڈیو پیکج) سعودی عرب ...