منگل , 12 نومبر 2019

بلوچستان، کالعدم بلوچ لبریشن آرمی کے 144 فراریوں نے ہتھیار ڈال دیئے

2121212

کوئٹہ (نامہ نگار) کمشنر قلات ڈویژن اکبر حریفال نے ذرائع کو بتایا کہ ہتھیار ڈالنے والے فراریوں کا تعلق کالعدم بلوچ لبریشن آرمی اور دیگر گروپس کے 144 فراریوں نے ہتھیار ڈال دیئے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ حکام کے سامنے ہتھیار ڈالنے والے عسکریت پسندوں میں کالعدم تنظیموں کے 4 اہم کمانڈر بھی شامل ہیں۔مذکورہ کمانڈروں میں بی ایل اے کے عید محمد عرف سانا، بلوچ لبریشن فرنٹ (بی ایل ایف) کے نیاز عرف دادا اور لشکر بلوچستان کے مہراللہ بھی شامل ہیں۔ہتھیار ڈالنے والی فراریوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ وہ ملک کے استحکام کیلئے کام کریں گے اور پُرامن زندگی گزاریں گے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ان کے علاقوں میں موجود تخریبی سرگرمیوں میں ملوث بعض عناصر نے انھیں غیر ریاستی اقدامات پر اُکسایا تھا۔انھوں نے حکومتی نمائندوں کو یقین دہانی کروائی کہ وہ آئندہ ملک کے استحکام اور وقار کے خلاف کسی بھی کارروائی کا حصہ نہیں بنیں گئے اور ملک کے دفاع کیلئے اپنی جانیں تک قربان کردیں گے۔مذکورہ تقریب میں ڈپٹی کمشنر قلات سرمد سلیم، قبائلی سردار میرعلی حیدر محمد حسینی اور دیگر افراد بھی شریک تھے۔ادھر کمشنر قلات نے فراریوں کے ہتھیار ڈالنے کے اقدام کو سراہا اور انھیں یقین دہانی کروائی کہ حکومت ان کی بحالی کے لیے ہر ممکن کوششیں کرے گی۔واضح رہے کہ کوئٹہ کے راستے ایران جانے والے زائرین پر عرصہ دراز سے حملے کئے جا رہے ہیں جس میں سینکڑوں افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں، کوئٹہ میں ہزارہ برادری پر خودکش حملوں کے نتیجے میں اب تک سینکڑوں افراد شہید ہو چکے ہیں ، بھارتی خفیہ ایجنسی اور سعودی سپورٹ میں کالعدم بی ایل اے، سپاہ صحابہ، لشکر جھنگوی اھل تشیع افراد کی نسل کشی کرنے میں مصروف ہیں جبکہ ٹارگٹ کلنگ، بم دھماکوں میں ملوث دہشتگرد اعلی عدالتوں سے رہا کئے جا رہے ہیں جو کہ ملکی استحکام کے لئے خطرہ بنتے جا رہے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

عمران خان کا استعفیٰ لینے کی حکمت عملی تبدیل ہو سکتی ہے: فضل الرحمان

اسلام آباد: جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی۔ف) کی قیادت میں اپوزیشن جماعتوں کے آزادی …