بدھ , 13 دسمبر 2017

بابری مسجد کی شہادت کو 25 برس مکمل‘ مسلمانوں نے یوم سیاہ منایا

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک) بابری مسجد کی شہادت کو 25 برس مکمل ہو گئے۔ اس موقع پر مسلمانوں نے یوم سیاہ منایا اور کاروبار بند رکھا جبکہ کسی بھی صورتحال سے نمٹنے کیلئے ایودھیا میں سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے۔
بابری مسجد تنازعے میں حق ملکیت کے مقدمے کی حتمی سماعت سپریم کورٹ میں شروع ہونا تھی تاہم بعض وجوہات کی بنا پر عدالت نے 8 فروری 2018ء تک کے لئے سماعت ملتوی کر دی ہے۔

بھارتی شہر ایودھیا میں 6دسمبر 1992ہندو جنونیوں نے بربریت کی انتہا کردی،ہزاروں انتہا پسند ہندوؤں نے تاریخی بابری مسجد کو شہید کردیا،جس کے بعد بھارت میں ہندو مسلم فسادات پھوٹ پڑےجو ہزاروں جانوں کے ضیاع کا سبب بھی بنے۔

بابری مسجد 16ویں صدی کا عظیم شاہکار تھاتاہم 1928 کو انتہا پسند ہندوؤں نے شوشہ چھوڑا کہ بابری مسجد دراصل رام کی جنم بھومی کو منہدم کرکے تعمیر کی گئی،1949میں بابری مسجد کو متنازع قرار دیکر بند کروادیا گیااور پھر 6دسمبر1992 میں ظلم کی انتہا ہوئی،جنونی ہندوؤں نے مسجد کو شہید کردیا۔

دوسری جانب بھارتی سپریم کورٹ نے بابری مسجد رام مندر مقدمے کی حتمی سماعت شروع کردی ہے ،سپریم کورٹ کا آئینی بینچ مقدمے کی سماعت روزانہ بنیاد پر کرے گا۔

اس سے قبل 2010 میں آلہ آباد کی ہائیکورٹ نے متنازع زمین کو مقدمے کے ایک مسلم اور 2 ہندو فریقوں میں برابر تقسیم کرنے کا حکم بھی دیا تھا۔

یہ بھی دیکھیں

یورپی یونین نے بھی امریکی صدر کے فیصلے کو ماننے سے انکار کردیا

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی صدر کے بیت المقدس کو اسرائیلی دارلحکومت تسلیم کرنے کے یکطرفہ ...