جمعہ , 20 جولائی 2018

امریکہ میں عام شہریوں کی جاسوسی کے قانون میں توسیع

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک)امریکی ایوان نمائندگان نے انٹرنیٹ صارفین کی جاسوسی کے قانون میں مزید چھے سال کی توسیع کردی ہے۔یہ قانون امریکی انٹیلی جینس اداروں کو اس بات کی اجازت دیتا ہے کہ وہ فیس بک، ٹوئیٹر اور اسکائپ سمیت کسی بھی انٹرنیٹ پلیٹ فارم کے غیر ملکی صارفین کے اکاؤنٹ کی جاسوسی کریں۔
امریکی انٹلیجنس اور سیکورٹی ایجنسیوں نے گیارہ ستمبر دوہزار ایک کے واقعات کے بعد سے دہشتگردی کے بہانے دنیا بھر کے شہریوں کے ٹیلیفونی مکالمات سننے اور انٹرنیٹ ڈیٹا کی جانچ پڑتال شروع کی تھی جسے بعد میں قانونی شکل دے دی گئی۔انسانی اور شہری حقوق کی انجمنوں نے انیٹر نیٹ صارفین اور ٹیلی فونی مکالمات کی ریکارڈنگ کے معاملات کو بنیادی شہری اور انسانی حقوق کے منافی قرار دیتے ہوئے عام شہریوں کی جاسوسی بند کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ٹرمپ انتخابات میں روسی مداخلت پر موقف سے پھر گئے

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) پیر کو ڈونلڈ ٹرمپ نے فن لینڈ کے دارالحکومت ہلسنکی میں اپنے روسی ...