پیر , 22 جنوری 2018

روس کی جوہری معاہدے سے متعلق امریکی پالیسی پر تنقید

ماسکو(مانیٹرنگ ڈیسک)روس نے ایران کے جوہری معاہدے کے حوالے سے امریکی پالیسی پر کڑی تنقید کی ہے۔روس کے نائب وزیر خارجہ اور اعلی روسی جوہری مذاکرات کار سرگئی ریابکوف نے ٹی وی چینل رشیا ٹو ڈے سے گفتگو کرتے ہوئے ایران کے ساتھ طے پانے والے ایٹمی سمجھوتے کے حوالے سے ڈونلڈ ٹرمپ کے حالیہ بیانات پر اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ روس، امریکی صدر کے بیان کو منفی قرار دیتا ہے۔

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے پر امریکہ کا تازہ ترین موقف منفی نظر آرہا ہے۔روس کے نائب وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ حالیہ بیانات سے ہمارے وہم و گمان درست ثابت ہوگئے۔ ٹرمپ کی جانب سے ایران کی جوہری پابندیوں کی معطلی کی پھر سے توثیق ہونا، کوئی غیر معمولی بات نہیں اور اس اقدام کو بڑھا چڑھا کر ظاہر نہیں کیا جانا چاہئے۔
سرگئی ریابکوف نے کہا کہ اس بات پر توجہ کرنی ہوگی کہ جوہری مسئلے پر یہ صرف امریکہ کا دعوی نہیں ہے بلکہ وہ اس حوالے سے دباؤ میں اضافہ کرے گا۔عالمی جوہری توانائی ایجنسی آئی اے ای اے نے اس سے پہلے 9 بار جوہری معاہدے کے حوالے سے ایران کی دیانتداری اور تہران کی جانب سے ایٹمی معاہدے پر عمل کی تصدیق کی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

فلسطینی پناہ گزینوں کی امداد بند کرنے سے نیا بحران پیدا ہوسکتا ہے:روس

ماسکو (مانیٹرنگ ڈیسک) روسی وزیرخارجہ سیرگی لافروف نے ایک بیان میں امریکا کی جانب سے ...