بدھ , 24 اکتوبر 2018

افغانستان داعش کے نئے گڑھ میں تبدیل ہورہا ہے:بھارتی تجزیہ نگار

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک) ہندوستان کے ایک ماہر سیکورٹی نے افغانستان کی موجودہ صورتحال کے بارے میں کہا ہے کہ داعش اس ملک میں اپنی جڑیں مضبوط کررہا ہے جو نہ صرف ہندوستان بلکہ چین کیلئے بھی ایک سیکورٹی چیلنج ہے۔

غیر ملکی ذرائع ابلاغ کےساتھ انٹرویو میں ’’قمر آغا ‘‘نے افغانستان کی موجودہ صورتحال کے بارے میں کہا کہ داعش اس ملک میں اپنی جڑیں مضبوط کررہا ہے جو نہ صرف ہندوستان بلکہ چین کیلئے بھی ایک سیکورٹی چلینج ہے۔

انہوں نے کہاکہ مشرق وسطیٰ علاقے میں اس تکفیری دہشتگرد گروہ کی شکست اوربعض طالبان لیڈران اوران کے حامیوں کااس گروہ میں شامل ہونا اور عراق وشام سے فرار ہورہے دہشتگرد عناصر کی اس میں شمولیت کے باعث افغانستان اب اس تکفیری گروہ کے نئے گڑھ میں بدل رہا ہے۔

انہوں نے کہاکہ عراق اورشام میں علاقے گنوانے کے بعد یہ گروہ بھوکھلاہٹ کا شکار ہے شام اورایران نے اس گروہ کو شکست سے دوچار کیا ہے تاہم یہ گروہ ابھی بھی دوبارہ خود کو منظم کرنے کی کوشش کرکے اپنے حامیوں کو افغانستان آنے کی درخواست کررہا ہے۔

انہوں نے کہاکہ عراق و شام میں ایسے بہت سے دہشتگرد ہیں جو دونوں ممالک سے فرار ہوکر افغانستان میں داخل ہونے کی کوشش کررہے ہیں لیکن افغانستان میں ان کا داخل ہونا اتنا آسان نہیں ہے اس لئے افغانستان پاکستان سرحد پر سرگرم بعض دہشتگرد گروہ انہیں اس جنگ زدہ علاقے میں داخل ہونے کیلئے امداد کرسکتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ افغانستان کی صورتحال پوری طرح کنٹرول سے باہر ہے۔

انہوں نے افغانستان میں بڑھتے داعش کی سرگرمیوں کو نہ صرف ہندوستان بلکہ چین کیلئے بھی ایک خطرہ قراردیتے ہوئے کہا کہ افغانستان ہندوستان سے کافی نزدیک ہے اوراگر یہاں داعش اپنے پیر جمانے میں کامیاب ہوتی ہے تو وہ ہندوستان میں بھی دراندازی کرسکتے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

خاشقجی قتل: سعودی پالیسیوں کے ناقد، سعودی شہری، خوف کا شکار

واشنگٹن (اسلام آباد) جمال خاشقجی کے سعودی قونصل خانے میں قتل کے بعد دوسرے ممالک ...