جمعرات , 9 جولائی 2020

قطری بحران کا حل صرف ہمارے پاس ہے،سعودی عرب

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک)قطر پر نجی کمپنیوں کے دہشت گرد گروپوں کو فنڈز فراہم کرنے میں ملوث ہونے کا الزام عائد کیا گیا ہے، عرب نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق اس فہرست میں ایسے ادارے بھی شامل ہیں جن کا قطر کے امداد ی یا خیراتی اداروں سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ماضی میں ان کے ذریعے دہشت گرد تنظیموں کو فنڈز منتقل کیے جاتے رہے۔دوسری جانب سعودی عرب میں شاہی دیوان کے مشیر سعود القحطانی نے قطر کو باور کرایا کہ آپ لوگ جو بھی کوشش کرلیں مگر بحران کا حل ریاض کے ہی پاس ہے۔

تفصیلات کے مطابق قطر کی اس نئی فہرست میں ایسے ادارے اور کمپنیاں شامل ہیں جو گھریلو تزئین و آرائش ، فرنیچر ، ٹیلی فون ، کرائے پر کاروں کا کاروبار کرتی ہیں۔ان میں الانصار موبائلز ، کار رینٹل او ر رئیل اسٹیٹ ،طفطناز برائے تجارت اور کنٹریکٹنگ ، جبل عمر برائے ٹریڈ اینڈ کنٹریکٹنگ ، خبرات برائے ٹریڈ اینڈ کنٹریکٹنگ ، الاتحاد فرنیچر اور ڈیکور شامل ہیں تاہم قطر نے ان کمپنیوں کی ویب سائٹس کو بھی بلاک نہیں کیا۔

قطر کی جانب سے جاری کردہ فہرست کے مطابق الضحیبیہ امبریلا اور ٹینٹس قطری شہریوں کے مکانوں کے لیے رئیل اسٹیٹ کا کام کرتی ہے۔قطر کی جاری کردہ اس فہرست میں شامل بعض افراد اور اداروں کے نام گروپ چار کی جانب سے جاری کردہ دہشت گردوں کی فہرست میں بھی شامل تھے ۔

یہ بھی دیکھیں

دنیا بھر کے ملکوں کی پاسپورٹ رینکنگ جاری، پاکستان کا 60واں نمبر

کورونا وبا کے بعد دنیا بھر کے ملکوں کی پاسپورٹ رینکنگ جاری کر دی گئی …