ہفتہ , 21 اپریل 2018

شام پر حملہ اقوام متحدہ کے منشور پر حملہ ہے

ماسکو(مانیٹرنگ ڈیسک) روسی صدر نے یہ بات اپنے ترک ہم منصب رجب طیب اردوغان سے ٹیلی فون پر بات چیت کرتے ہوئے کہی۔صدر ولادی میر پوتین اور اردوغان نے اس گفتگو میں امریکی جارحیت کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا ہے۔روس اور ترکی کے صدور نے شام کے بحران کو سیاسی طریقے سے حل کیے جانے کی غرض سے ماسکو اور انقرہ کے درمیان تعاون کو مزید فعال کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔روسی صدر ولادی میر پوتین نے اس سے پہلے شام کے خلاف امریکہ اور اس کے اتحادیوں کے حملے کو دہشت گردی کے خلاف جنگ میں مصروف ایک خود مختار ملک کے خلاف جارحیت قررا دیتے ہوئے کہا تھا کہ روسی ماہرین اور دوما کے شہریوں نے اس بات کی تصدیق نہیں کی ہے کہ دوما میں کیمیائی حملہ شامی فوج نے کیا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

لشکرحسینی کے عظیم علمبردار حضرت غازی عباس علمدارؑ کا جشن ولادت

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )علمدار کربلا حضرت ابوالفضل العباس علیہ السلام کا جشن ولادت پوری ...