جمعرات , 24 اکتوبر 2019

سعودی عرب تکفیری نظریہ کی ترویج پر سالانہ 100 ارب ڈالر خرچ کرتا ہے، امریکی سینیٹر

AMERICAN SENETOR

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی عرب پاکستان میں وہابی اور تکفیری نظریہ کی ترویج کے لئے ہزاروں مدارس کو بجٹ فراہم کرتا ہے اور دنیا میں وہابی تکفیری نظریہ کی ترویج کے لئے 100 ارب ڈالر سالانہ خرچ کررہا ہے۔ان خیالات کا اظہار امریکی سینیٹر کرس مرفی نے کیا۔ انہوں نے کہا کہ 1960 کی دہائی سے لیکر اب تک سعودی عرب ہر سال 100 ارب ڈالر تکفیری فکر و سوچ اور نظریہ کی ترویج اور فروغ کے لئے صرف کررہا ہے اورڈالروں کے زور پر تکفیری فکر اور نظریہ کو دنیا میں پھیلا رہا ہے۔ امریکی سینیٹر کے مطابق سعودی عرب پاکستان میں ہزاروں تکفیری مدارس کو تکفیری نظریہ کی تبلیغ اور ترویج کے لئے بھاری مقدار میں رقم فراہم کررہا ہے اور تکفیری نظریہ ہی در حقیقت دہشت گردی کی اصل بنیاد ہے اور یہی تکفیری، اہل تشیع کے بھی سخت اور شدید مخالف ہیں ۔ ذرائع کے مطابق سعودی عرب کے حکام ، پاکستان، افغانستان، ہندوستان اور دنیا کے دیگر ممالک میں دہشت گردی اور تکفیریت کے فروغ کے لئے اربوں ڈالر صرف کررہے ہیں اور حقیقی اسلام کی تابناک تصویر کو اپنے مذموم اعمال کے لئے مسخ کرنے کی ناپاک کوشش میںمصروف ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

انصاراللہ اور سعودی عرب کے درمیان جنگ بندی کے لئے کمیٹی تشکیل

دوحا: عرب نیوز چینل نے خبر دی ہے کہ یمن اور سعودی عرب کے درمیان …