پیر , 28 مئی 2018

حزب اللہ کے دشمن بھی مقاومت کو ایک علاقائی طاقت کے طورپر تسلیم کرتے ہیں:روسی صحافی

ماسکو (مانیٹرنگ ڈیسک)ایک روسی صحافی نےلبنان کے پارلیمانی انتخابات میں شاندار کامیابی کو مقاومت کی طاقت اورمقبولیت کا مظہر قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ مقاومت کے مخالفین بھی تحریک مقاومت کوا یک علاقائی طاقت کے طورپر تسلیم کرتے ہیں۔

’’کیرئن نیوک فیلڈ‘‘نے لبنان کے پارلیمانی انتخابات میں شاندار کامیابی کو مقاومت کی طاقت اورمقبولیت کا مظہر قراردیتے ہوئے کہا کہ مقاومت کے مخالفین بھی تحریک مقاومت کوا یک علاقائی طاقت کے طورپر تسلیم کرتے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ تحریک مقاومت لبنان کی طاقت کا اہم اثاثہ ہے حزب اللہ کی سیاسی جماعت آغاز سے ہی شفاف سیاست اور بدعنوانی کے خلاف برسرپیکار ہونے کی تاکید رہی ہے۔انہوں نے کہاکہ حزب اللہ کی سیاسی جماعت میں ایسا ایک بھی سیاستدان موجود نہیں ہے جس کا تعلق ارب پتی خاندانوں سے ہو اور جو ملک کا استحصال کررہا ہو۔

انہوں نے کہاکہ حزب اللہ عیسائیوں ،سنیوں ،دروز اور شیعوں میں اس لئے سب سے زیادہ مقبول ہے کیونکہ یہ تنظیم کبھی بھی اپنے حامیوں کو شیعہ آئیڈیولاجی کی پیروی کرنے پر مجبور نہیں کرتی۔

انہوں نے کہاکہ شامی تنازعے میں ایران ،روس اور دمشق کےساتھ اتحاد کے بعد حزب اللہ کی طاقت میں زبردست اضافہ ہوا ہے جسے تسلیم کرنے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہاکہ لبنان کے وزیر اعظم سعد حریری بھی جریدہ دی پولٹیکو کےساتھ انٹرویو میں حزب اللہ کو ایک علاقائی طاقت کے طورپر تسلیم کرچکے ہیں۔

موصوف تجزیہ نگار نے کہاکہ حزب اللہ ایک اہم اورطاقتور علاقائی فوج ہے لبنانی فوج کے مقابلے میں حزب اللہ بہتر تربیت یافتہ ،منظم اور جدید ہتھیاروں سے لیس ہے اور لبنان کی سیکورٹی ، امن واستحکام اور اسرائیل کے مقابلے میں لبنان کا ایک اہم ستون ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ایرانی مسلح افواج دشمن کی ہر قسم کی جارحیت کا منہ توڑ جواب دینے کے لئے آمادہ: امیر فرزاد اسماعیلی

تہران(مانیٹرنگ ڈیسک)خاتم الانبیاء ايئر ڈیفنس ہیڈکوارٹرکے سربراہ امیر فرزاد اسماعیلی نے صحافیوں سے گفتگو میں ...