پیر , 20 اگست 2018

ایران اور ترک صدور کی مسئلہ فلسطین پر ٹیلیفونک گفتگو

تہران (مانیٹر نگ ڈیسک)اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے صیہونی فوجیوں کے ہاتھوں فلسطینی مسلمانوں کی شہادت کو بہت بڑا سانحہ قراردیتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ اور او آئی سی کو اس حساس صورتحال میں فلسطینیوں کی حمایت میں اپنا کردار ادا کرنا چاہئییے۔

اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے اپنے ترک ہم منصب رجب طیب اردوغان کے ساتھ ٹیلی فونک رابطے کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ غاصب صیہونیوں کے سنگین جرائم سے فلسطینی عوام کے درمیان اتحاد ماضی سے زیادہ مضبوط ہوگا۔

صدر مملکت نے مزید کہا کہ ہمیں کوشش کرنی ہوگی کہ ایک آواز بن کر مظلوم فلسطینیوں کی حمایت کرتے ہوئے امریکہ اور صیہونیوں کی سازشوں کو بے نقاب کریں۔انہوں نے کہا کہ امریکہ نے غیرقانونی اقدام کے تحت اپنا سفارتخانہ بیت المقدس منتقل کرکے نہ صرف فلسطینی قوم کو مشتعل کردیا بلکہ مسلمانوں کی دل آزاری بھی کی۔

ایرانی صدر نے مزید کہا کہ امریکہ اور قابض صیہونی حکمرانوں کو فلسطینیوں کے قتل عام پر جواب دینا ہوگا۔ بدقسمتی سے امریکی صدر سمجھتے ہیں کہ وہ صیہونیوں کی حمایت کرکے فلسطینی قوم کی مزاحمت کو دبا سکتے ہیں۔

اس موقع پر ترک صدر نے مقبوضہ فلسطین میں صیہونیوں کی حالیہ سنگین کاروائیوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسلامی سربراہوں کے غیرمعمولی اجلاس میں ایران کی شرکت کو اہم قرار دیا ۔رجب طیب اردوغان نے کہا کہ وقت آگیا ہے کہ ہم اپنے فلسطینی بھائیوں کے حق میں اپنا فرض ادا کریں۔ترک صدر نے اس موقع پر ڈاکٹر روحانی کو استنبول میں ہونے والے اسلامی تعاون تنظیم (OIC) کے غیرمعمولی اجلاس میں شرکت کرنے کی دعوت دی ۔

یہ بھی دیکھیں

افغانستان: ’طالبان نے 170 مسافروں کو اغوا کر لیا‘

کابل (مانیٹرنگ ڈیسک) افغانستان کے صوبے تخار میں طالبان نے تقریباً 170 ’مسافروں‘ کو اغوا ...