پیر , 10 دسمبر 2018

کشمیر میں مکمل ہڑتال سے معمولات زندگی بری طرح متاثر

سری نگر (مانیٹرنگ ڈیسک) ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر میں عام ہڑتال کی وجہ سے معمولات زندگی بری طرح متاثر ہوئے ہیں۔ ہڑتال کی کال حریت رہنماوں سید علی گیلانی، میرواعظ مولوی عمر فاروق اور محمد یاسین ملک کی طرف سے حالیہ شہری ہلاکتوں اور وادی کے سرکردہ صحافی، ادیب اور قلمکار سید شجاعت بخاری کے بہیمانہ قتل کے خلاف دی گئی ۔

ہڑتال کے باعث تمام کاروباری مراکز، مارکیٹیں اور تعلیمی ادارے بند ہیں اور سڑکوں پر ٹریفک نہ ہونے کے برابر ہے جبکہ آج (جمعرات کو) چلنے والی تمام ٹرینوں کو منسوخ کر دیا گیا ہے۔

ریلوے حکام کا کہنا ہے کہ بارہ مولہ اور سری نگر کے درمیان کوئی ٹرین نہیں چلے گی۔ اسی طرح سری نگر اور بانہال کے درمیان بھی کوئی ٹرین نہیں چلے گی۔ مذکورہ عہدیدار نے بتایا کہ ریلوے سروس کی معطلی کا مقصد ریلوے املاک اور مسافروں کو نقصان سے بچانا ہے۔

ہڑتال کے موقع پر وادی میں سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں۔ دوسری جانب جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ میں سری نگر جموں قومی شاہراہ پر پانپور میں بدھ کی شام مسلح افراد نے پولیس کی ایک پارٹی پر حملہ کر کے تین اہلکاروں کو زخمی کر دیا۔ سیکورٹی ذرائع نے بتایا کہ فورسز نے علاقہ کو محاصرے میں لے کر حملہ آوروں کی تلاش شروع کر دی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

82 سال پرانا ریکارڈ یاسرشاہ کی جھولی میں گرنے کو تیار

دبئی(مانیٹرنگ ڈیسک) 82 سال پرانا اہم ترین ٹیسٹ ریکارڈ بھی یاسر شاہ کی جھولی میں ...