ہفتہ , 17 نومبر 2018

شہید صالح علی الصماد کی زندگی مختصر داستان

تاریخ پیدائش: یکم جنوری 1979ء
جائے پیدائش: صوبہ صعدہ ، یمن
تاریخ شہادت: 19 اپریل 2018ء
جائے شہادت: صوبہ الحدیدہ، یمن
مادر علمی: صفاء یونیورسٹی
صالح الصماد یمنی مزاحمتی تحریک انصار اللہ کے اہم رہنمائوں میں شمار ہوتے تھے، وہ انصار اللہ کے سیاسی انچارج اور اہم لیڈروں میں شامل تھے وہ انصاراللہ کی تشکیل کردہ سپریم سیاسی کونسل کے رکن اور سربراہ تھے، الصماد آغاز میں اپنے آبائی علاقے میں درس وتدریس سے وابستہ تھے، انہوں نے صعدہ میں واقع عبداللہ بن مسعود نامی اسکول میں تدریس کا کام کیا اور انصاراللہ کی سابق یمنی صدر علی عبداللہ صالح کے ساتھ ہونے والی جنگوں میں انصاراللہ کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے تھے، 2011ء میں الصماد نے انصار اللہ کے سیاسی معاملات کو سنبھالتے ہوئے انصار اللہ کےسیاسی آفس کے انچارج بن گئے ، 6اگست 2016ء میں انہوں نےبطور سربراہ سپریم سیاسی کونسل کا حلف پارلیمنٹ کے سامنے اٹھایا، جس کے بعدانہوں نے ملک کی باگ دوڑ سنبھال لی۔

شہادت:
23اپریل 2018ء میں سپریم پولیٹکل کونسل نے صالح الصمادکی شہادت کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ الصماد 19 اپریل بروز جمعہ رات سعودی اتحاد کے فضائی کارروائی میں دیگر 6 ساتھیوں کے ہمراہ شہید ہوگئے ہیں ، کونسل کے بیان میں یہ بھی بتایا گیا کہ الصماد کی جگہ مہدی الشاط کر کونسل کا نیا سربراہ مقرر کردیا گیا ہے، 28 اپریل کو وفاقی دارالحکومت صنعاء میں الصماد کے جنازے کا اہتمام کیا گیا جس میں بیس ہزار یمنیوں نے شرکت کرتے ہوئے الصماد کو الوداع کہا الصماد کی تدفین صنعاء میں واقع مشہور میدان ’’البعین ‘‘ میں ہوئی۔

یہ بھی دیکھیں

دوھرا معیار

الوقت نیوز (ترجمہ تسنیم خیالی) ایک بندہ قتل ہوا تو پوری دنیا کہہ رہی ہے ...