پیر , 16 جولائی 2018

فلسطینی اتھارٹی کی حکومت ’صدی کی ڈیل‘ کی سہولت کار ہے:حماس

مقبوضہ بیت المقدس (مانیٹرنگ ڈیسک)اسلامی تحریک مزاحمت [حماس] نے فلسطینی اتھارٹی کی وفادار حکومت کی غزہ کی پٹی کے عوام کے خلاف انتقامی پالیسیوں کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ حماس کا کہنا ہے کہ فلسطینی اتھارٹی کی حکومت غزہ کی پٹی کے عوام پر پابندیاں مسلط کرکے امریکی ۔ صہیونی امن منصوبے ’صدی کی ڈیل‘ کی سہولت کار بن چکی ہے۔

حماس کے ترجمان فوزی برھوم نے ایک بیان میں کہا کہ رام اللہ حکومت کا غزہ کی پٹی پر پابندیوں کو برقرار رکھنا اور اسرائیل اور عالمی برادری کو بھی غزہ پر پابندیوں میں نرمی سے روکنے کی ترغیب اس بات کا ثبوت ہے کہ حکومت ’صدی کی ڈیل‘ کی امریکی سازش کو آگے بڑھانے میں معاونت کررہی ہے۔

ترجمان نے غزہ کی پٹی کے دو ملین عوام پر عاید پابندیوں کے تباہ کن نتائج کی ذمہ داری صہیونی ریاست اور صدر محمود پرعاید کی اور کہا کہ صدر عباس اور ان کی جماعت قومی مصالحتی منصوبے کو آگے بڑھانے میں رکاوٹیں کھڑی کررہے ہیں۔

خیال رہے کہ اسرائیل اور فلسطینی اتھارٹی نے مل کر غزہ کی پٹی کے عوام پر پابندیاں عاید کر رکھی ہیں۔ غزہ کی پٹی کے سرکاری ملازمین کی تن خواہوں میں کمی کردی گئی ہے اور غزہ کے اسپتالوں کو ادویہ کی ترسیل، بجلی، گیس اور پانی کی فراہمی سمیت کئی دوسرے منصوبوں کو معطل کردیا گیاہے۔

یہ بھی دیکھیں

دشمن کوقوم پرجارحیت مسلط کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی:اسماعیل ھنیہ

مقبوضہ بیت المقدس (مانیٹرنگ ڈیسک)اسلامی تحریک مزاحمت [حماس] کے سیاسی شعبے کے سربراہ اسماعیل ھنیہ ...