بدھ , 17 اکتوبر 2018

گلگت بلتستان کو بنیادی آئینی اور انتظامی حقوق دئیے جائیں

(رپورٹ: عبدالجبارناصر)
مختلف سیاسی، مذہبی جماعتوں اور سماجی رہنمائوں نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ گلگت بلتستان کو ملک کے دیگر صوبوں کی طرح بنیادی آئینی اور انتظامی حقوق دئے جائیں ، گلگت بلتستان میں شیڈول فور کے نام پر حقوق کی آواز بلند کرنے والوں کے خلاف کارروائی بند کی جائے، گلگت بلتستان کا کوئی آئینی حل نکالنے تک خطے میں ہر ٹیکس وصولی کا سلسلہ بند کیا جائے اور سی پیک میں گلگت بلتستان کو حق دیا جائے۔ یہ مطالبہ متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے سابق سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار، پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنماء تاج حیدر، پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ سید مصطفیٰ کمال، معروف قوم پرست رہنماء اور گلگت بلتستان اسمبلی کے رکن نواز خان ناجی، عوامی ایکشن کمیٹی گلگت بلتستان کے سربراہ مولانا سلطان رائیسی، معروف مذہبی رہنماء علامہ امین شہیدی، گلگت بلتستان اسمبلی میں قائد حزب اختلاف کیپٹن (ر) محمد شفیع، جسٹس (ر) سید جعفر شاہ، تحریک انصاف کے مرکزی رہنماء سید علی حیدر زیدی، معروف اینکر وسیم بادامی اور دیگر نے گلگت بلتستان ایوئرنیس فورم کے زیر اہتمام آرٹس کونسل کراچی میں قومی کانفرنس برائے آئینی حقوق گلگت بلتستان سے خطاب کے دوران کیا۔

“گلگت بلتستان کے آئینی حقوق “ پر کراچی میں کانفرنس

“گلگت بلتستان کے آئینی حقوق “ پر کراچی میں کانفرنس

Gepostet von Iblagh News am Montag, 16. Juli 2018

ایم کیو ایم کے سابق سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا کہ گلگت بلتستان کو دیگر صوبوں کی طرح آئینی حقوق دئے جائیں اور گلگت بلتستان میں چیف سیکریٹری سمیت اہم عہدوں پر وہاں کے عوام کو تعینات کیا جائے، مکمل آئینی صوبہ بننے تک وہاں کوئی ٹیکس عائد نہ کیا جایے۔ دیامر باشاہ ڈیم کی مکمل ریئلٹی گلگت بلتستان کو دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ قومی اسمبلی میں گلگت بلتستان کے حق میں سب زیادہ آوازایم کیو ایم نے اٹھائی ہے۔ پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما تاج حیدر نے کہا کہ ہم گلگت بلتستان کو بنیادی حق پیپلز پارٹی نے دیا ہے اور پیپلز پارٹی کا مطالبہ ہے کہ گلگت بلتستان کو آئینی صوبے کا درجہ دیا جائے، یہ تاثر غلط ہے کہ اس سے تنازع کشمیر متاثر ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک میں خطے کو حق دیا جائے گلگت بلتستان آرڈر 2018ء کی مذمت کرتے ہے اس آرڈر کے تحت گلگت بلتستان کے عوام کو انسانی بنیادی حقوق سے محروم کیا گیا ہے اور گلگت بلتستان کے عوام کی حقوق کی جنگ اب ہماری جنگ ہے، ہم چاہتے ہیں کہ گلگت بلتستان سمیت پورے پاکستان میں ایک ساتھ جنرل الیکش ہوں۔

“گلگت بلتستان کے آئینی حقوق “ پر کراچی میں کانفرنس

“گلگت بلتستان کے آئینی حقوق “ پر کراچی میں کانفرنس

Gepostet von Iblagh News am Montag, 16. Juli 2018

پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ مصطفی کمال گلگت بلتستان کے عوام محب وطن پاکستانی ہے ان کی محرومیوں کا ازالہ کر کے آئینی حقوق دیے جائیں اور پی ایس پی گلگت بلتستان کی عوام کی حقوق کے حصول کی ہر اقدام کی تائید کرے گی۔ گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی کے ممبر قوم پرست رہنما نواز خان ناجی نے کہا کہ اب وقت آ گیا ہے کہ گلگت بلتستان کے 20 لاکھ عوام کو مکمل حقوق دیے جائیں۔ ہم نے بہت صبر کیا ہے۔ گلگت بلتستان کے عوام کی ایکشن کیمٹی کے چیئرمین حافظ سلطان رئیسی نے کہا کہ جھوٹے وعدوں سے مذید عوام کو بیوقوف نہیں بنایا جا سکتا ، گلگت بلتسان کی عوام اپنے حقوق کی حصول کیلئے جاگ چکی ہے، اور اب وقت آ گیا ہے کہ پاکستان سمیت تمام عالمی طاقتیں اس خطے کی محرومیوں کا ازالہ کرتے ہوئے یہاں کے باسیوں کو مکمل آئینی حقوق دیے جائے۔

“گلگت بلتستان کے آئینی حقوق “ پر کراچی میں کانفرنس

“گلگت بلتستان کے آئینی حقوق “ پر کراچی میں کانفرنس

Gepostet von Iblagh News am Montag, 16. Juli 2018

امت واحدہ پاکستان کے سربراہ معروف مذہبی رہنما علامہ امین شہیدی نے کہا کہ 70 سال پہلے ہم انگریزوں کے غلام تھے اب انگریزوں کے غلاموں کے غلام ہیں، گلگت بلتستان کے لوگ چاہتے ھیں کہ اپنے تقدیر کا فیصلہ خود کریں لیکن پاکستان پر مسلط برطانوی سامراجی ظالم اور استعماری نظام اس علاقے کے لوگوں کو ھمیشہ نان ایشوز میں الجھا کر فرقہ واریت لسانیت علاقائیت اور دھشت گردی جیسے مسائل میں مبتلا رکھنے کی کوشش کرتی ھے تا کہ لوگ اپن بنیادی ترین انسانی حقوق کی پامالی کے خلاف آواز نہ اٹھا سکیں لیکن اس سرزمین کی نئی نسل اب باشعور ھو چکی ھے انھیں اپنے حقوق کی پامالی کا علم ھوچکا ھے اب گلگت بلتستان میں مزھبی منافرت کی کوئی سازش کامیاب نہیں ہو گی۔ قبل اس کے کہ اس علاقے میں دشمن کوئی فتنہ شروع کرا دے ریاست کو عوام کا بنیادی مطالبہ مان لینا چاھئیے اس سرزمین کے باسیوں کو کم از کم یا مقبوضہ کشمیر والوں کو حاصل حقوق دئے جائیں یا آزاد کشمیر کے لوگوں کو حاصل انسانی حقوق ، لیکن اس کے برعکس اب ان کی زمینوں پر ریاستی اداروں کا جبری قبضہ بھی شروع ہو چکا ھے جو کسی بھی صورت میں قابل ِقبول نھیں ھے اور جو راھنما اس جبر کے خلاف آواز اٹھائے حکومت اور ریاستی ادارے اسے شیڈول فور میں شامل کر کے اس کی زندگی اجیرن کر دیتے ھیں خطے کے سیاسی اور سماجی رہنمائوں کو بدنام زمانہ شیڈیول فور میں شامل کر کے خطے کے عوام میں شدید نفرت پیدا کرنے کی کوشش کی جا رہی ھے۔

سابق چیف جسٹس سپریم ایپلیٹ کورٹ گلگت بلتستان سید جعفر شاہ نے کہا کہ گلگت بلتستان کے عوام کو سپریم کورٹ تک رسائی دی جائے اوروہاں پر جاری ترقیاتی پروگراموں کا مکمل رائیلٹی وہاں کی عوام کو ملنی چاہیے۔ تحریک انصاف کے مرکزی رہنما علی زیدی گلگت بلتستان میں 92 فیصد لوگ تعلیم یافتہ ہیں یہ خطہ دنیا کے خوبصورت ترین خطوں میں سے ہے انہیں ان کے جائز اور آئینی حقوق سے محروم رکھنا پاکستان کے مفاد میں نہیں ہے، ان کے حقوق دے دیے جائے۔ گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر کیپٹین (ر) محمد شفیع نے کہا کہ 70 سال سے گلگت بلتسان کی عوام شناخت سے محروم ہے اور سی پیک جیسا اہم منصوبہ اس خطے سے گزر رہا ہے جس کی کامیابی کیلئے ضروری ہے کہ گلگت بلتسان کی عوام کو مکمل آئینی حقوق دیے جائیں اور سی پیک میں بھر پور حصہ دیا جائے۔ اینکر پرسن وسیم بادامی نے کہا کہ گلگت بلتستان کے عوامی کی حقوق کے حصول کیلئے اس پرامن جدوجہد کو اہمیت دینی چاہئے ، بندوق نہ اٹھانے والوں کو حقوق سے محروم رکھنا سسٹم کی غلطی ہے اور اس وقت پارلیمنٹ کی اپنی کیا حیثیت بنتی جا رہی ہے وہ سب کے سامنے ہے۔

یہ بھی دیکھیں

سعودی صحافی کا قتل: بنیادی اقدار پر مغرب کے ایمان کا امتحان

(سید مجاہد علی) امریکہ خود کو مہذب دنیا کا لیڈر کہتا ہے اور اس کے ...