بدھ , 21 نومبر 2018

امارات کا یمن جنگ میں بچوں کو بطور جنگجو استعمال کرنے کا انکشاف

(تسنیم خیالی)
کچھ عرصہ قبل میں نے ایک کالم میں اس بات کا تذکرہ کیا تھا کہ متحدہ عرب امارات یمن میں تین سال سے زائد عرصے سے جاری جنگ میں غیر ملکی کرائے کے قاتلوں کا استعمال کرتا آرہا ہے اور اس ضمن میں امارات کو لومبیا سے مزید 3000 کرائے کے قاتل لارہاہے، البتہ اب امارات کے حوالے سے ایک انتہائی شرمناک اور افسوس ناک انکشاف سامنے آیا ہے جس سے ثابت ہوتا ہے کہ امارات تمام عالمی اقدار اور قوانین کا پاسدار ملک نہیں بلکہ ایک ایسا ملک ہے جو کہ ناصرف ان اقدار اور قوانین کی پرواہ نہیں کرتا بلکہ انکی دھجیاں اڑاتے ہوئے انہیں پیروں تلے روند دیتا ہے ۔

امارات کا یہ نیا اسکینڈل کچھ یوں ہے کہ وہ یمن جنگ میں جہاں دنیا کے مختلف ممالک سے کرائے کے قاتل لارہا ہے وہیں امارات اس جنگ میں افریقی ممالک سے کم سن بچوں کو بھی استعمال کررہا ہے ، برطانوی ویب سائٹ ’’میڈل ایسٹ آئی‘‘ کے مطابق امارات خود کو دہشت گردی’’ہیومن ٹیرافیکنگ‘‘، قتل وغارت گری کےمخالف ملک کے طور پر پیش کررہا ہے اور اس غرض کےلیے اماراتی دنیا بھر میں سیمینارز اور کانفرنسز کا انعقاد کرتے ہیں جنکے پیچھے امارات اپنا اصل اور خوفناک چہرہ چھپائے پھرتا ہے ۔

’’میڈل ایسٹ آئی‘‘ کی رپورٹ کے مطابق امارات نے یمن جنگ کے لئے بے شمار افریقی بچے یمن میں داخل کیے جو اماراتی افواج اور کرائے کے قاتلوں کے ساتھ ملک کر کارروائیاں کرتے ہیں ۔

رپورٹ کے بقول ان افریقی بچوں کو مختلف افریقی ممالک سے جمع کرکے یمن سے قریب بندرگاہوں کے ذریعے یمن داخل کیا گیا اور قابل غور بات یہ ہے کہ ان بیشتر بندرگاہوں پر تجارتی معاہدوں کے تحت کنٹرول امارات کا ہے جو بھرپور طریقے سے انہیں مجرمانہ انداز میں استعمال کررہا ہے ۔

یہ معاملہ انتہائی خطرناک ہے جس کے لئے عالمی برادری کو فی الفور متحرک ہونے کی ضرورت ہے اور ویسے بھی اماراتی تما م حدیں پار کرچکے ہیں ، عالمی برادری کو امارات کے خلاف فوری طور پر اقدامات اٹھانے انتہائی ضروری ہیںاور اسے دوسرے ممالک کے لئے عبرت کا نشانہ بنایا جائے، البتہ ایسا ہونا ممکن دکھائی نہیں دے رہا کیونکہ اس معاملے میں امارات اکیلا ملوث نہیں ، دنیا کے بیشتر بڑے ممالک کو اماراتی کرتوتوں کا علم ہے اور ان کی خاموشی امارات کی حوصلہ افزائی کے لئے کافی ہے ،دوسری بات یہ ہے کہ جن افریقی ممالک سے ان بچوں کو لایا گیا کیا انہیں علم نہیں کہ ان کے بچوں کو کہاں لے جایا جارہا ہے اور ان سے کیا کروایا جارہا ہے ؟معاملے کی سنجیدگی تو اپنی جگہ مگر اس میں صرف امارات ملوث نہیں بلکہ بہت سے ممالک ملوث ہیں جن کے آگے عالمی ادارے بھی بے حس کھڑے دکھائی دے رہے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

امریکہ دنیا میں سب کا ہمسایہ ہے

(محمد مہدی)  امریکہ میں وسط مدتی انتخابات کے انعقاد کے ساتھ ہی امریکی سیاست اور ...