پیر , 16 دسمبر 2019

لائبرمین کی تقرری، صہیونی ریاست جنگی مجرموں کے ہاتھوں یرغمال ہو گئی:حماس

436x328_20159_159134

غزہ (مانیٹرنگ ڈیسک) اسلامی تحریک مزاحمت ’’حماس‘‘ نے اسرائیل کے انتہا پسند یہودی سیاست دان آوی گیڈور لائبرمین کو وزیردفاع بنائے جانے پر اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ لائبرمین کی تقرری کے بعد صہیونی ریاست مکمل طورپر دہشت گردوں اور جنگی مجرموں کے ہاتھوں میں یرغمال ہو کر رہ گئی ہے۔ذرائع کے مطابق حماس کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ لائبرمین کی وزارت دفاع کے عہدے پر تقرری سے یہ آشکار ہو گیا ہے کہ اسرائیل میں انتہا پسندی کا غلبہ ہے اور نسل پرستانہ بنیادوں پراعلیٰ عہدوں پرتقرریاں کی جاتی ہیں۔ لائبرمین کو وزیردفاع کا عہدہ سونپے جانے سے یہ واضح ہو گیا ہے کہ اسرائیل اب جنگی مجرموں اور نسل پرستوں کے ہاتھوں میں یرغمال ہوچکا ہے۔حماس کے ترجمان سامی ابو زھری نے ایک بیان میں کہا کہ عالمی برادری کو لائبرمین کی تقرری کے بعد صہیونی ریاست کی پالیسیوں اور جرائم کا نوٹس لینا چاہیے اور یہ دیکھنا چاہیے کہ لائبرمین فلسطینیوں کے خلاف کس نوعیت کی ظالمانہ پالیسیوں پرعمل درآمد کرنا چاہتے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

یمن پر سعودی جارحیت کا سلسلہ جاری

صنعا: سعودی عرب کی یمن کے مظلوم اور نہتے عربوں کے خلاف بربریت اور جارحیت …