بدھ , 21 نومبر 2018

پاکستان کی قومی اسمبلی کے نو منتخب اسپیکر اسد قیصر کی زندگی کی مختصر داستان

پیدائش : 15نومبر 1969ء
جائے پیدائش : ضلع صوابی ، صوبہ خیبر پختونخواہ
پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما اسد قیصر 25 جولائی 2018ء میں صوابی کے حلقہ این اے 18صوابی ون سے رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئے اور پھر 15 اگست 2018ءمیں قومی اسمبلی کے بطور 21 ویں اسپیکر منتخب ہوئے ۔

اسد قیصر زمانہ طالبِ علمی میں ہاکی اور والی بال کے بہت اچھے کھلاڑی رہے ہیں اور انہوں نے اس زمانے سے طلبہ سیاست سے سیاسی میدان میں قدم رکھ دیا تھا۔عمران خان کی جانب سے 1996 میں نئی سیاسی جماعت پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی بنیاد رکھنے کے بعد اسد قیصر نے اس میں شمولیت اختیار کرلی تھی۔

قبلِ ازیں اسد قیصر جماعتِ اسلامی اور شبابِ ملی پاکستان میں مختلف عہدوں پر فائز رہے۔پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کرنے کے بعد پارٹی نے انہیں اسی سال ضلعی صدر نامزد کردیا تھا۔اسد قیصر کی نظریں پی ٹی آئی کے صوبائی صدر کی نشست پر مرکوز تھیں جو انہیں پارٹی چیئرمین عمران خان کی جانب سے 2008 میں دے دی گئی تھی۔

2013 کے انتخابات میں خیبرپختونخوا سے تحریک انصاف کی کامیابی کے بعد اسد قیصر صوبائی اسمبلی کے اسپیکر منتخب ہوئے۔25 جولائی کو ہونے والے عام انتخابات میں اسد قیصر نے قومی اسمبلی کی نشست این اے 18 صوابی ون، اور خیبرپختونخوا اسمبلی کی نسشت سے پی کے 44 صوابی 2 سے کامیابی حاصل کی تھی۔

قومی اسمبلی کی نشستوں پر اکثریت حاصل کرنے کے بعد پی ٹی آئی مرکز میں حکومت بنانے کی پوزیشن میں آگئی اور اسد قیصر کو ہی اسپیکر قومی اسمبلی نامزد کردیا گیا۔پارٹی کی جانب سے اسپیکر قومی اسمبلی نامزدگی کے بعد اسد قیصر نے اپنی صوبائی اسمبلی کی نشست چھوڑ دی۔اسد قیصر نے اسپیکر قومی اسمبلی کے لیے ہونے والے انتخاب میں 176 ووٹ حاصل کرکے کامیابی حاصل کی۔

اسد قیصر تعلیمی میدان میں سرگرم ہیں اور یہ قائدِ اعظم گروپ آف اسکولز کے مالک بھی ہیں۔یہاں یہ بات قابلِ ذکر ہے کہ اسد قیصر خیبرپختونخوا سے تعلق رکھنے والے دوسری شخصیت ہیں جنہیں اسپیکر قومی اسمبلی منتخب کیا گیا ہے جبکہ ان سے قبل گوہر ایوب خان اس صوبے سے تعلق رکھنے والی پہلی شخصیت تھی جنہیں یہ اعزاز حاصل ہوا تھا۔

خیال رہے کہ ایاز صادق کے نااہل ہونے کے بعد خیبرپختونخوا سے تعلق رکھنے والے مرتضٰی جاوید عباسی نے یہ منصب بطور قائم مقام اسپیکر سنبھالا تھا۔

 

یہ بھی دیکھیں

دوھرا معیار

الوقت نیوز (ترجمہ تسنیم خیالی) ایک بندہ قتل ہوا تو پوری دنیا کہہ رہی ہے ...