جمعرات , 15 نومبر 2018

عمران خان ملک کے 22ویں وزیر اعظم منتخب

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان ملک کے 22ویں وزیر اعظم منتخب ہوگئے۔قائد ایوان کے انتخاب کے لیے قومی اسمبلی کا اجلاس ساڑھے 3 بجے شروع ہونا تھا، تاہم اجلاس ایک گھنٹے کی تاخیر کے بعد ساڑھے 4 بجے شروع ہوا۔

اجلاس کے آغاز پر اراکین اسمبلی کی آمد کے ساتھ ہی مہمانوں کی گیلری میں ضرورت سے زائد افراد کی موجودگی کے باعث بدنظمی بھی دیکھنے میں آئی اور مختلف افراد نے پریس گیلری کے ذریعے پارلیمنٹ میں داخل ہونے کی کوشش کی، جس پر اپوزیشن کے ارکان کی جانب سے تحفظات کا اظہار کیا گیا۔

اجلاس کے آغاز پر مسلم لیگ(ن) کے رہنما مرتضیٰ جاوید عباسی نے کہا کہ پہلے دن ہی ایوان کے تقدس کو پامال کیا گیا، آپ ہمارے بھی اسپیکر ہیں، سب کو ساتھ لے کر چلیں۔اس موقع پر پیپلز پارٹی کے رکن خورشید شاہ نے بھی گیلریوں میں کھڑے افراد پر اعتراض کیا اور کہا کہ انہیں باہر نکالا جائے۔

جس کے بعد اسپیکر اسد قیصر نے سیکیورٹی اسٹاف کو اسمبلی ہال کے راستے میں کھڑے لوگوں کو باہر نکالنے کی ہدایت کردی۔قومی اسمبلی کے اجلاس میں اپوزیشن کی جانب سے نعرے بازی بھی کی گئی، تاہم اسپیکر اسمبلی اسد قیصد کے انتباہ کے بعد صورتحال بہتر ہوگئی۔

ان تمام صورتحال کے بعد اسپیکر اسد قیصر نے اراکین کو مخاطب کرتے ہوئے وزیراعظم کے انتخاب کے حوالے سے طریقہ کار سے آگاہ کیا اور اراکین کو ایوان میں لانے کے لیے 5 منٹ تک گھنٹی بجائی گئی، جس کے بعد ایوان کے دروازے بند کردیے گئے۔

اس عمل کے بعد قومی اسمبلی کے اسپیکر نے وزیر اعظم کے انتخاب کے لیے ایوان کو 2 حصوں میں تقسیم کیا اور بتایا کہ عمران خان کے حامی اراکین دائیں جانب جبکہ شہباز شریف کے حامی اراکین بائیں جانب لابی میں چلیں جائیں۔

تاہم اس دوران پاکستان پیپلز پارٹی اور جماعت اسلامی کے اراکین اپنی نشستوں پر بیٹھے رہے اور وزیر اعظم کے انتخاب کے عمل میں حصہ نہیں لیا۔

اس موقع پر ایک دلچسپ لمحہ یہ دیکھنے میں آیا کہ سابق اسپیکر قومی اسمبلی اور مسلم لیگ(ن) کے رہنما ایاز صادق، پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کے پاس گئے اور ووٹنگ کے لیے انہیں منانے کی کوشش کی، تاہم ان کی یہ کوشش رائیگاں گئی۔

خیال رہے کہ نئے وزیراعظم کے انتخاب کے لیے 342 ارکان کے ایوان میں 172 ارکان کی واضح اکثریت ملنا ضروری ہے، تاہم اس مرتبہ ایوان میں اب تک 330 ارکان کی تعداد موجود ہے اور اگر آج کے اجلاس میں تمام ارکان موجود ہوئے تو واضح اکثریت کے لیے ارکان کی تعداد کم ہوجائے گی۔

یہ بھی دیکھیں

ملک بھر میں نئی بلدیاتی حلقہ بندیاں کرائی جائیں گی،الیکشن کمیشن

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) الیکشن کمیشن نے ملک بھر میں نئی بلدیاتی حلقہ بندیاں کرانے کا ...