بدھ , 21 اگست 2019

لائبرمین کو وزیر دفاع بنائے جانے پر اسرائیلی وزیر ماحولیات نے استعفیٰ دیدیا

[caption id="attachment_22583" align="alignnone" width="300"]Israeli Environment Protection Minister Avi Gabbay delivers a speech during the inauguration of France's EDF Energies Nouvelles Zmorot solar plant facility near the southern Israeli city of Ashkelon May 22, 2016. REUTERS/Baz Ratner TPX IMAGES OF THE DAY *** Local Caption *** 2016. REUTERS/Baz Ratner
[/caption]تل ابیب (مانیٹرنگ ڈیسک) اسرائیل کی حکمراں جماعت ’لیکوڈ‘ کی جانب سے شدت پسند مذہبی سیاسی جماعت ’’اسرائیل بیتنا‘‘ کے ساتھ سیاسی اتحاد اور شدت پسند سیاست دان آوی گیڈور لائبرمین کو وزیردفاع بنائے جانے پرحکومت کی دوسری اتحادی جماعتوں کی جانب سے سخت برہمی کا اظہار کیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق لائبرمین کو وزارت دفاع کا قلم دان سونپے جانے کے خلاف بہ طور احتجاج اسرائیل کے وزیر ماحولیات آوی گیبائی نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق مسٹر گیبائی کا تعلق حکمران جماعت کی اتحادی ’’کولانو‘‘پارٹی سے ہے۔رپورٹ کے مطابق آوی گیبائی کی جانب سے استعفیٰ آوی گیڈور لائبرمین کو وزیردفاع کے عہدے پر تعینات کرنے کا رد عمل ہے کیونکہ وہ لائبرمین کو وزیردفاع مقرر کیے جانے کی سخت مخالفت کرچکے ہیں مگر ان کی مخالفت کے باوجود وزیراعظم نے لائبرمین کو اس کلیدی عہدے پر تعینات کرکے خود کو مزید متنازع بنا دیا ہے۔خیال ہے کہ مستعفی وزیرماحولیات نے حال ہی میں اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ لائبرمین کو حکومت میں شامل کیے جانے کے بعد ان کا کابینہ میں رہنے کا کوئی جواز نہیں رہے گا۔واضح رہے کہ آوی گیڈور لائبرمین کو اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو نے موشے یعلون کی جگہ وزیردفاع مقرر کیا ہے۔ آوی گیڈور کے لیے وزرارت دفاع کا قلم دان موشے یعلون سے خصوصی طورپر خالی کرایا گیا تھا۔

یہ بھی دیکھیں

ایران کے خلاف امریکی پابندیاں عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہے:روسی نمائندہ

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک)ایران کے خلاف امریکی پابندیاں عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہے۔اقوام متحدہ میں …