ہفتہ , 22 ستمبر 2018

۱۲ خواتین کی جانب سے صہیونی ریاست کے سربراہان پر جنسی ہراسگی کے الزامات عائد

یروشلم (مانیٹرنگ ڈیسک)اسرائیلی اخبار ’یدیعوت احرونوت‘ اور ’اسرائیل ٹائمز‘ نے خبر دی ہے کہ نیتن یاہو کے ترجمان کے ذریعے ۱۲ خواتین جنسی ہراسگی کا شکار ہوئیں جن میں سے دو خواتین ’سیلازر‘ اور ’شینڈی رائس‘ نے اخبار ’وال سٹریٹ جرنل‘ کے نامہ نگار سے گفتگو میں اس راز کو فاش کر دیا ہے۔

نیویارک کے سنیٹ انتخابات کی امیدوار جولیا سیلازر (Julia Salazar) نے صہیونی وزیر اعظم کے ترجمان پر جنسی ہراسگی کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈیوڈ کییس (David Keyes) نے انہیں جنسی آزار و اذیت کا نشانہ بنایا۔صہیونی ریاست کے وزیر اعظم نیتن یاہو کے ترجمان ڈیوڈ کییس کے ذریعے جولیا سیلازر کو جنسی ہراسگی کا شکار بنائے جانے کی خبر عام ہونے کے بعد مزید ۱۱ خواتین نے بھی اقرار کیا ہے کہ انہیں بھی ڈیوڈ کییس نے جنسی حملے کا نشانہ بنایا۔

اسرائیلی اخبار ’یدیعوت احرونوت‘ اور ’اسرائیل ٹائمز‘ نے خبر دی ہے کہ نیتن یاہو کے ترجمان کے ذریعے ۱۲ خواتین جنسی ہراسگی کا شکار ہوئیں جن میں سے دو خواتین ’سیلازر‘ اور ’شینڈی رائس‘ نے اخبار ’وال سٹریٹ جرنل‘ کے نامہ نگار سے گفتگو میں اس راز کو فاش کیا ہے۔رائس نے ٹویٹر پر بھی اعلان کیا ہے کہ ڈیوڈ کییس نے اس کے ساتھ جنسی زیادتی کی ہے۔

اس اخبار کی رپورٹ کے مطابق، ڈیوڈ کییس حالیہ دنوں مبینہ ۱۰ خواتین کے ساتھ رابطے میں رہے ہیں اور انہیں رشوت دے کر خاموش رکھنے کی کوشش کرتے رہے ہیں۔مزید رپورٹ کے مطابق، نیتن یاہو کے ترجمان نے ان خواتین کو معافی نامے بھی ایمیل کئے ہیں جنہیں انہوں نے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا اور یہ ایمیلز اسرائیل ٹائمز اخبار کے ہاتھ بھی لگ گئے ہیں۔ڈیوڈ کییس نے ان تمام ثبوتوں کے باوجود ان باتوں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ سب باتیں ان پر محض الزامات ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

ایران کے تیل کے بائیکاٹ پر امریکی کمپنی کا انتباہ

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک)امریکی کمپنی آئل پرائز نے خبردار کیا ہے کہ ٹرمپ حکومت کی جانب ...