اتوار , 18 نومبر 2018

ترکی نے شرح سود میں 6 فیصد سے زائد اضافہ کر دیا

انقرہ (مانیٹرنگ ڈیسک)ترکی کے مرکزی بینک نے شرح سود 675 بیسز پوائنٹ بڑھا دیا ہے جس کے بعد ملک میں شرح سود 24 فیصد تک پہنچ گئی ہے۔ترک صدر رجب طیب اردوان کی جانب سے شرح سود کم رکھنے کے بیان کے باوجود سینٹرل بینک آف ترکی نے شرح سود 17.75 فیصد سے بڑھا کر 24 فیصد کر دیا ہے۔

ترکی کے مرکزی بینک کی جانب سے شرح سود میں اضافے کے بعد ترک لیرا کی قدر میں اضافہ دیکھا گیا۔سینٹرل بینک آف ترکی کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ مہنگائی کی شرح میں بہتری تک مانیٹری پالیسی کے حوالے سے سخت مؤقف برقرار رہے گا۔

ماہر اقتصادیات کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ یہ توقع سے بہت زیادہ ہے، اس فیصلے سے مارکیٹ کو ایک سنگل گیا ہے اور وہ سنگل بہت اچھا ہے۔معاشی ماہرین کے مطابق اس فیصلے سے لوگوں کا لیرا کے حوالے سے اعتماد بڑھے گا اور ہو اسے دوبارہ خریدیں گے۔

دوسری جانب ترک صدر رجب طیب اردوان نے کہا ہے کہ ترکی میں معاشی بحران نہیں بلکہ ہمارے خلاف ایک بین الاقوامی سازش ہو رہی ہے جسے ہم ناکام بنا دیں گے۔طیب اردوان نے کہا کہ ترکی کو حالیہ چند سالوں میں بغاوت، دہشت گردی اور اقتصادی مشکلات کا سامنا رہا لیکن ٹھوس اقدامات پر عمل کرتے ہوئے تمام مسائل پر قابو پا لیں گے۔

یہ بھی دیکھیں

فرانس:پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف احتجاج، خاتون ہلاک

پیرس(مانیٹرنگ ڈیسک)فرانس میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف ملک بھر میں ‘یلو ...