جمعہ , 19 اکتوبر 2018

خاتون ڈاکٹر پر جنسی حملہ، شیخ زید ہسپتال کے 2 عہدیداران غفلت برتنے پر معطل

رحیم یار خان  (مانیٹرنگ ڈیسک) رحیم یار خان کے شیخ زید میڈیکل کالج ہسپتال میں خاتون ڈاکٹر پر جنسی حملے کا واقعہ منظر عام پر آنے کے بعد پرنسپل پروفیسر ڈاکٹر مبارک علی چوہدری اور میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر غلام ربانی کو فرائض سے غفلت پر معطل کر دیا گیا۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز شیخ زید میڈیکل کالج ہسپتال میں ایک سوئپر کی جانب سے خاتون ڈاکٹر پر مبینہ طور پر جنسی حملے کا واقعہ سامنے آیا تھا۔ پنجاب کے محکمہ اسپیشلائز ہیلتھ اور میڈیکل ایجوکیشن نے ایک نوٹیفکیشن (No. S.O (AMI-I) 5-185/2016/SZMC) کے ذریعے مبارک علی چوہدری کو معطل کرنے کا اعلان کیا۔ نوٹیفکیشن میں کہا گیا کہ نئے احکامات آنے تک ان کی جگہ ڈاکٹر عبدالرحمٰن شیخ زید ہسپتال کے پرنسپل کے عہدے پر رہیں گے۔

علاوہ ازیں متعلقہ حکام نے ڈاکٹر غلام ربانی کو نوٹیفکیشن (No.SO(GC-I)4-1/2018) کے تحت معطل کیا اور ان کی جگہ اسسٹنٹ میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر خالد محمود کو میڈیکل سپرنٹنڈنٹ کی ذمہ داریاں سونپ دی گئیں۔ شیخ زید ہسپتال کے ترجمان رانا الیاس احمد نے بتایا کہ ہسپتال کے دونوں عہدیدران کو معطل کر دیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایسشن (وائے ڈی اے) کے ڈاکٹر شبیر وڑائچ نے الزام لگایا تھا کہ ہسپتال کے سوئپر کی جانب سے خاتون ڈاکٹر پر جنسی حملے کا واقعہ بدھ کے روز پیش آیا تھا۔ انہوں نے الزام لگایا کہ پرنسپل اور ایم ایس کی جانب سے واقعے کو منظر عام پر نہ لانے کے لیے متاثرہ خاتون ڈاکٹر پر دباؤ ڈالا گیا تھا۔ واضح رہے کہ ینگ ڈاکٹرز نے سینئر ڈاکٹرز کے مذکورہ اقدام کے خلاف ہفتے کے روز احتجاج کرنے کا اعلان بھی کر دیا۔

یہ بھی دیکھیں

کراچی کو پھر سے روشنیوں کا شہر بنانے کا عزم

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) کراچی پھر سے روشنیوں کا شہر بنانے کا عزم، مسائل کے ...