بدھ , 21 نومبر 2018

نائجیریا: مذہبی عسکریت پسند گروپ بوکو حرام نے طبی رضاکار کو قتل کر دیا

ابوجا (مانیٹرنگ ڈیسک) نائجیریا میں مذہبی عسکریت پسند گروپ بوکو حرام نے طبی رضاکار کو قتل کر دیا۔ برطانوی اخبار ‘دی گارجین’ کے مطابق حکام نے بتایا کہ24 سالہ حوا محمد لیمن کو بوکو حرام نے رواں برس مارچ میں اغوا کر لیا تھا اور مطالبے کی مدت ختم ہونے پر قتل کر دیا۔

واضح رہے کہ نایجیریا سے تعلق رکھنے والی حوا محمد لیمن بین الاقوامی ریڈ کراس سوسائٹی کے تعاون سے جاری اسپتال میں کام کرتی تھیں، جنہیں شمالی جنوبی ریاست سے دیگر دو ساتھی ورکرز کے ساتھ اغوا کیا تھا۔

بوکوحرام نے گزشتہ ماہ آن لائن ایک ویڈیو پیغام جاری کیا جس میں کہا تھا کہ اگر مدت ختم ہونے سے پہلے مطالبہ پورا نہیں کیا تو وہ کم از کم ایک مغوی لڑکی کو قتل کر دیں گے۔

بوکو حرام نے ویڈیو پیغام میں یہ نہیں بتایا کہ ان کے مطالبے کیا تھے۔ اس حوالے سے مزید بتایا گیا کہ دوسری طبی رضا کار کو ستمبر میں قتل کیا گیا تھا۔ویڈیو میں کہا گیا کہ حوا محمد لیمن موت کی لائق ہیں کیونکہ انہوں نے ریڈ کراس کے ساتھ کام کر کے اسلام کو ’ترک‘ کر دیا تھا۔

دوسری جانب حکام نے کہا کہ نائیجریا کی حکومت اور عسکری ادارے بوکو حرام اور اس کے دیگر گروہوں کے خاتمے پر ہیں لیکن بوکوحرام نے گزشتہ ماہ عسکری اہلکاروں پر حملے کر کے 48 کو ہلاک کر دیا تھا۔

نائجیریا کے وزیراطلاعات لیا محمد نے کہا کہ حکومت ‘طبی رضا کار کی موت پر بہت غمگین ہے لیکن وعدہ کرتے ہیں کہ معصوم خواتین کی رہائی کے لیے تمام اقدامات اٹھائیں گے’۔دوسری جانب صدارتی دفتر سے ٹوئٹ کیا گیا کہ ‘وفاقی حکومت نے لڑکی کی جان بجانے کے لیے اپنے تمام اختیارات بروئے کار لائے’۔

یہ بھی دیکھیں

رواں سال اسرائیلی فوج کے ہاتھوں 908 فلسطینی بچے زیر حراست

مقبوضہ بیت المقدس (مانیٹرنگ ڈیسک)قابض اسرائیلی فوج نے سنہ 2018ء کے شروع سے اب تک ...