بدھ , 21 نومبر 2018

جمال خاشقجی قتل: شفاف تحقیقات اور موت کے ذمہ داروں کا مکمل احتساب ہونا چاہئیے: اقوام متحدہ

نیویارک (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی عرب نے ترکی میں اپنے قونصل خانے میں صحافی جمال خاشقجی کے قتل کی تصدیق کر دی ہے۔ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتریس نے سعودی صحافی جمال خاشقجی کی موت کی خبر پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ جمال خاشقجی کی موت کی تصدیق پریشان کن ہے، جمال کی موت پر شفاف تحقیقات ہونی چاہئیں اور موت کے ذمہ داروں کا مکمل احتساب ہونا چاہئیے۔

واضح رہے کہ کل سعودی عرب نے اپنے قونصل خانے میں صحافی کے قتل کی تصدیق کر دی ہے۔سعودی پراسیکیوٹر کا کہنا ہے کہ قونصل خانے میں خاشقجی اور ان سے ملنے والے افراد کے درمیان ہاتھا پائی کا نتیجہ صحافی کی موت کی صورت میں نکلا تاہم انہوں نے خاشقجی سے لڑنے والوں کی شناخت ظاہر نہیں کی اور لڑائی کا سبب بھی نہیں بتایا گیا، یہ بھی واضح نہیں کیا گیا کہ خاشقجی کی لاش کہاں ہے۔

پراسیکیوٹر کا کہنا ہے کہ واقعے کی تحقیقات جاری ہے، سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے سینئر مشیر جنرل احمد العسیری کو عہدے سے برطرف کر دیا گیا ہے۔

ایک اور مشیر اور بیرون ملک پروپیگنڈے کے انچارج سعود القحطانی کو بھی ہٹا دیا گیا ہے، 18 سعودی شہریوں کو گرفتار کیا گیا ہے، مجموعی طور پر 5 اعلیٰ عہدیداروں کو برطرف کیا گیا ہے۔

سعودی عرب کے فرماں روا شاہ سلمان نے انٹیلی جنس کی تشکیل نو کے لیے ولی عہد شہزادہ محمد کی سربراہی میں وزارتی کمیٹی قائم کر دی ہے جو ایک ماہ میں رپورٹ دے گی۔

یہ بھی دیکھیں

رواں سال اسرائیلی فوج کے ہاتھوں 908 فلسطینی بچے زیر حراست

مقبوضہ بیت المقدس (مانیٹرنگ ڈیسک)قابض اسرائیلی فوج نے سنہ 2018ء کے شروع سے اب تک ...