ہفتہ , 15 دسمبر 2018

ایس پی طاہر داوڑ افغانستان میں قتل، تصاویر جعلی ہیں،شہریار آفریدی

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)اسلام آباد سے اغوا ہونے والے ایس پی طاہر داوڑ کے افغانستان میں قتل کی سوشل میڈیا پر خبریں اور تصاویر وائرل ہو گئیں لیکن وزیر مملکت داخلہ شہریار آفریدی نے معاملہ حساس قرا دے کر تصاویر کو جعلی قرار دے دیا ہے۔

اسلام آباد سے مبینہ اغوا ہونے والےایس پی رورل پشاور طاہر داوڑ کی افغانستان میں قتل ہونے کی تصویر وائرل، اعلیٰ حکام نے خبر کی تصدیق کرنے سے انکارکر دیا، وزیر مملکت داخلہ شہریار آفریدی نے تصویر کو جعلی قرار دیدیا۔طاہر داوڑ 26 اکتوبر کو اسلام آباد سے اغوا کیےگئے، 28 اکتوبر کو تھانہ رمنا میں مقدمہ درج کر کے پولیس کی تحقیقاتی ٹیمیں بنا دی گئی تھی۔

ایس پی کے فون نے آخری لوکیشن ایف ٹین میں ظاہر کی تھی، بتایا گیا کہ بنوں میں پوسٹنگ کے دوران طاہر داوڑ کو جان سے مار دینے کی دھمکیاں ملی تھیں۔ٹیموں نے پنجاب اور دیگر علاقوں میں ایس پی کی تلاش شروع کر دی، اسلام آباد پولیس نے بھی مختلف علاقوں میں چھاپے مارے مگر کامیابی نہ ملی۔ شمالی وزیرستان میں ٹیم نے تلاش کی اور جرگہ عمائدین سے بھی رابطے کئے۔

سوشل میڈیا پر ایس پی طاہر داوڑ کی مبینہ تصویر آنے کے بعد ایک پیغام بھی گردش کر رہا ہے کہ کالعدم تنظیم نے پولیس افسر کو افغان صوبے ننگرہار میں مبینہ طور پرقتل کر دیا ہے۔پاکستانی حکام افغان حکومت کے ساتھ رابطہ میں ہیں اور وہاں سے تصدیق کے بعد ہی کوئی بیان جاری کیا جائے گا۔ آئی جی خیبر پختونخوا اور متعلقہ اداروں نے بھی طاہر داوڑ کی شہادت کی تصدیق نہیں کی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

روس نے ایٹم بم لیجانے والے 2 طیارے ونزویلا پہنچا دیے

ماسکو (مانیٹرنگ ڈیسک)روسی وزارت دفاع کے مطابق 2 ٹی یو 160 طیارے 10 ہزار کلومیٹر ...