ہفتہ , 17 اپریل 2021

امریکی فوج کا ایک اور دستہ شام سے عراق پہنچ گیا

دمشق (مانیٹرنگ ڈیسک)شام سے امریکی فوجیوں کا ایک اور دستہ باہر نکل گیا۔ایک سو بیس بکتر بند گاڑیوں اور ٹرکوں پر مشتمل امریکی فوجی دستہ شام کی سرحد سے عراقی کردستان کے سرحدی علاقے میں واقع فوجی چھاؤنی پہنچ گیا۔

شام سے فوجی واپس بلانے کے امریکی صدر کے اعلان کے بعد سے اب تک سیکڑوں امریکی فوجی عراقی سرحد عبور کر کے صوبہ الانبار کی عین الاسد چھاؤنی منتقل ہو چکے ہیں۔ٹرمپ نے چھبیس دسمبر کو عراق کا خفیہ دورہ کیا تھا اور عین الاسد چھاؤنی میں خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ عراق سے امریکی فوجیوں کے انخلا کا کوئی پروگرام زیر غور نہیں ہے۔

امریکی صدر کے اس بیان پر عراق کے سیاسی اور عوامی حلقوں نے شدید ردعمل ظاہر کیا تھا۔امریکی فوجی نام نہاد داعش مخالف اتحاد میں شمولیت کے نام سے عراق میں موجود ہیں۔عراق میں داعش کی شکست اور اس گروہ کے آخری اڈے کے خاتمے بعد سے عراقی حکام اور سیاستداں اپنے ملک سے امریکی فوجیوں کے انخلا کا مطالبہ کرتے چلے آرہے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …